” مسٹر پرویز مشرف آپ کھڑے ہو جائیں“خصوصی عدالت کے سربراہ کا حکم

” مسٹر پرویز مشرف آپ کھڑے ہو جائیں“خصوصی عدالت کے سربراہ کا حکم

 اسلام آباد (خصوصی رپورٹ) ” مسٹر پرویز مشرف آپ کھڑے ہو جائیں“ ۔سابق صدرپرویزمشرف کی خصوصی عدالت میں آمد پر ان کی وکلا ٹیم میں شامل افراد اپنی سیٹوں پر کھڑے ہوگئے اور انہوں نے تالیاں بھی بجائیں۔ اسی دوران خصوصی عدالت کے جج بھی کمر عدالت میں اپنی سیٹوں پر آئے گئے اور ان کی باڈی لینگوج یہ بتا رہی تھی کہ انھوں نے پرویز مشرف کو دیکھ لیا ہے لیکن اس کے باوجود انھوں نے پرویز مشرف کے وکیل انور منصور سے استفسار کیا کہ ان کے موکل کہاں ہے جس پر انہوں نے پرویز مشرف کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ مائی لارڈ وہ بیٹھے ہیں۔ بنچ کے سربراہ نے پرویز مشرف سے کہا کہ مسٹر مشرف آپ کھڑے ہو جائیں جس پر سابق فوجی صدر اپنی نشست پر کھڑے ہوگئے اور عدالت کو سلیوٹ کیا۔ کچھ دیر تک سابق آرمی چیف جب اپنی نشست پر کھڑے رہے تو ان کی وکلا ٹیم میں شامل احمد رضا قصوری نے عدالت سے استدعا کی کہ چونکہ ان کے موکل بیمار ہیں اس لیے انھیں بیٹھنے کی اجازت دی جائے جس پر عدالت نے پرویز مشرف کو کرسی پر بیٹھنے کی اجازت دے دی۔ سماعت کے دوران پرویز مشرف کی چہرے پر اضطراب کی کیفیت نمایاں تھی اور اگر ان کے وکلا کی ٹیم میں شامل کوئی وکیل ان کے سامنے آ جاتا تو وہ اسے پیچھے ہٹنے کا کہہ دیتے تاکہ عدالتی کارروائی دیکھ سکیں۔عدالت نے جب ان کے وکلا کے موقف کو تسلیم کیا کہ پہلے عدالتی دائرہ سماعت اور ججوں کے متعصب ہونے کا فیصلہ کرے اور پھر فرد جرم عائد کی جائے تب جا کر سابق صدر کے چہرے پر سکون کے آثار نظر آئے۔

کھڑے ہو جائیں

مزید : صفحہ اول