اتحادی ممالک امریکہ سے مسلح ڈرون خرید سکیں گے

اتحادی ممالک امریکہ سے مسلح ڈرون خرید سکیں گے

  

 واشنگٹن(آن لائن)امریکا نے ڈرون طیاروں کی فروخت سے متعلق قوانین نرم کردیے ہیں۔جس کے تحت امریکی کمپنیوں کو اسلحہ سے لیس جاسوس طیارے برآمد کرنے کی اجازت مل گئی ہے۔امریکی محکمہ خارجہ نے ڈرون طیاروں کی فروخت سے متعلق قوانین میں نرمی کا اعلان کیا ہے جس کے تحت اسلحے سے لیس فوجی اور کمرشل ڈرونز فروخت کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ نئے قوانین کے مطابق لین دین صرف سرکاری سطح پر ہی ہوگی، درآمد کرنے والے ممالک کو ان ڈرونز کے استعمال سے متعلق کچھ شرائط پر عمل کی یقین دہانی کرانا ہوگی ، جن میں ملکی دفاع کے علاوہ عالمی قوانین کی پاسداری پر عمل بھی شامل ہے ، اس کے علاوہ ان ڈرونز کو مقامی افراد کی غیر قانونی نگرانی کے لیے استعمال نہیں کیا جاسکے گا۔ایک امریکی عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ امریکا ان ڈرون طیاروں کی نگرانی کرے گا۔ اور فی الحال اہل ممالک کی کوئی فہرست مرتب نہیں کی گئی۔امریکی اخبار کے مطابق اٹلی اور ترکی کے علاوہ خلیج فارس کے ممالک امریکا سے اسلحہ بردار ڈرونز خریدنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے۔ تاہم امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا ہے کہ نئی پالیسی کے تحت ان درخواستوں پر غور کیا جائے گا،امریکا نے اب تک صرف اپنے قریبی اتحادی برطانیہ کو یہ ڈرونز فروخت کیے ہیں۔ نئی پالیسی میں ڈرونز کے استعمال کے اصول بھی واضح کئے گئے ہیں۔ جسکے مطابق خریدار ملک کو ڈرونز کو غیرقانونی فضائی نگرانی کے لئے استعمال کرنے کی اجازت نہیں ہو گی۔ خریدار ڈرونز کو اپنے عوام کے خلاف غیر قانونی طور پر استعمال نہیں کر سکیں گے۔ محکمہ خارجہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ خریدار ملک کو اس بات کی ضمانت دینا ہو گی کہ ڈرونز کا استعمال بین الاقوامی قوانین کے تحت کیا جائے گا۔

مزید :

عالمی منظر -