گلگت میں نگران وزیراعلی اور گورنر برجیس طاہر دونوں متنازعہ ہوچکے ، مہدی شاہ

گلگت میں نگران وزیراعلی اور گورنر برجیس طاہر دونوں متنازعہ ہوچکے ، مہدی شاہ

  

اسلام آباد(آن لائن) گلگت بلتستان کے سابق وزیراعلی سید مہدی شاہ نے کہا کہ گلگت میں نگران وزیراعلی اور گورنر برجیس طاہر دونوں متنازعہ ہوچکے ہیں وزیراعظم نواز شریف نے جی بی میں الیکشن جیتنے کیلئے غیر جمہوری طریقے اپنا شروع کردئیے‘ بے نظیر بھٹو کی جوتیوں کے صدقے اقتدار اور زرداری کی قومی مفاہمتی پالیسیوں کے تحت نواز شریف کو دھرنوں سے نجات ملی‘ گورنر کو غیر آئینی طریقے سے ہٹاکر گلگت بلتستان کے عوام کی غیرت کو للکارا گیا ہے‘ دوبارہ حکومت بنائیں گے اور غیر آئینی اور اوچھے ہتھکنڈے اختیارکرنے والوں کا پرچی ووٹ سے ان کا احتساب کیا جائے گا۔ آن لائن کودئیے گئے انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ وزیر امور کشمیر ہمیں ڈرانے دھمکانے کی بجائے وزیراعظم کے بھائی شہباز شریف سے پوچھیں کہ انہوں نے درجنوں گھروں پر قبضہ کرکے اپنا دفتر کیسے بنایا۔ احتساب سے ڈرنے والے ہوتے تو بے نظیر بھٹو کے ساتھی نہ ہوتے۔ ہم نے ضیاء اور مشرف آمریت کو بھی دیکھا ہے۔ بے نظیر بھٹو نے میثاق جمہوریت پر چلتے ہوئے نواز شریف کیلئے اقتدار کا راستہ ہموار کیا ہے۔ پیپلزپارٹی کے قائدین کی جوتیوں کے صدقے نواز شریف آج وزیراعظم بنے ہیں۔ برجیس طاہر متنازعہ گورنر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں نواز شریف کو اگر حکومت بنانے کیلئے اتنی ہی جلدی ہے تو وہ آئینی طریقے سے گورنر کو ان کے عہدے سے ہٹاتے۔ جمہوریت پارلیمنٹ‘ آئین اور لوگوں کے حقوق کی بات کرنے والے نواز شریف سے ہمیں اس طرح کے اوچھے ہتھکنڈوں کی امید نہیں تھی۔

مزید :

علاقائی -