طاہر القادری کے 64ویں یوم پیدائش کو آج دنیا بھر میں منایا جا ئے گا

طاہر القادری کے 64ویں یوم پیدائش کو آج دنیا بھر میں منایا جا ئے گا
 طاہر القادری کے 64ویں یوم پیدائش کو آج دنیا بھر میں منایا جا ئے گا

  

 لاہور (پ ر )پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری کے 64ویں یوم پیدائش کو آج پاکستان سمیت دنیا کے 90ممالک میں پاکستان عوامی تحریک اور تحریک منہاج القرآن کے زیر اہتمام سادگی سے منایا جا ئے گا ۔ڈاکٹر طاہر القادری 19فروری 1951کو جھنگ میں پیدا ہوئے ،ابتدائی تعلیم جھنگ اور اعلیٰ تعلیم لاہور میں حاصل کی۔1981میں تحریک منہاج القرآن کی بنیاد رکھی جس کا آج 100سے زائد ممالک میں تنظیمی فعال نیٹ ورک قائم ہے ۔ڈاکٹر طاہر القادری نے ایک ہزار سے زائد کتب تحریر کیں جن میں سے 500سے زائد شائع ہو چکی ہیں،بقیہ طباعت کے آخری مراحل میں ہیں ۔قرآن پاک کا آسان فہم اردو ترجمہ اور 600صفحات پر مشتمل دہشت گردی کے خلاف فتویٰ سے انہیں دنیا بھر میں زبر دست پذئرائی ملی۔مذکورہ فتویٰ سے پاکستان اور اسلام کے انتہاپسندانہ منفی تاثر کو زائل کرنے میں مدد ملی ۔فتویٰ کا انگریزی ،ہندی اور انڈونیشین زبانوں میں ترجمہ ہو چکا ہے جبکہ فرانسیسی،ڈینش،نارویجن اور عربی زبانوں میں تراجم آخری مرحلے میں ہیں ۔ڈاکٹر طاہر القادری نے دنیا کے 100سے زائد ممالک میں 6000سے زائد خطابات اور لیکچر دئیے۔دہشت گردی کے خلاف تحقیقی اور فکری سطح پر گرانقدر خدمات امن اور بین المذاہب ہم آہنگی کے فروغ اور شاندار انسانی فلاحی خدمت انجام دینے پر تحریک منہاج القرآن کو 2011میں اقوام متحدہ کی طرف سے خصوصی مشاورتی نمائندہ کا درجہ دیا گیا جو انکی قومی اور بین الاقوامی خدمات کا اعتراف ہے ۔پاکستان میں منہاج القرآن چارٹرڈ یونیورسٹی اور 700سے زائد تعلیمی اداروں کا قیام تعلیمی شعبہ میں انکی ناقابل فراموش اور قابل فخر خدمات ہیں ۔ڈاکٹر طاہر القادری واحد پاکستانی شخصیت ہیں جنہوں نے پاکستان سے علم حاصل کر کے اسے دنیا بھر میں عام کیا اور وہ واحد غیر کاروباری شخصیت ہیں جنکی ذات اور تحقیقی کام سے ہزاروں خاندانوں کا روزگار وابستہ ہے اور وہ اپنے تحقیقی کام اور کتب کی کوئی رائلٹی نہیں لیتے ۔ڈاکٹر طاہر القادری نے 2013 میں فرسودہ اور دھاندلی پر مبنی انتخابی نظام کو تبدیل کرنے کیلئے اسلام آباد کی طرف تاریخی لانگ مارچ کیا اور عوام کو آئینی، سیاسی، جمہوری شعور دیا ۔انہوں نے 2014میں 10نکاتی ایجنڈے اور انقلاب مارچ کے ذریعے پاکستان بھر کے مظلوم اور غریب عوام کو اپنے حق کیلئے آواز اٹھانے کی ہمت اور نیا جذبہ دیا ۔ پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے راولپنڈی امام بارگاہ میں ہونیوالے دھماکے اور فائرنگ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ نام نہاد حکمران قومی ایکشن پلان کو نافذ کرنے میں سنجیدہ ہی نہیں ورنہ قوم ہر روز اپنے کندھوں پر اپنے پیاروں کے جنازے نہ اٹھاتی ۔انہوں نے کہاکہ ایک منظم منصوبہ بندی کے ساتھ امام بارگاہوں کو ٹارگٹ کیا جا رہا ہے جس کا مقصد ملک میں فرقہ واریت کی آگ لگانا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نا اہل حکمران اور دہشت گرد پاکستان کی بقا کیلئے سب سے بڑا خطرہ بن چکے ہیں ۔انہوں نے شہدائے کے لواحقین دلی ہمدردی کا اظہار کیا اور زخمیوں کی جلد صحتیابی کیلئے دعاکی ۔انہوں نے واقعہ کے فوری بعد عوامی تحریک اور منہاج القرآن کے کارکنان کو امدادی سرگرمیوں اور خون کے عطیات دینے کی ہدایت کی۔انہوں نے کہا کہ ہر شہر دہشت گردی کی آگ میں جل رہا ہے اور حکمران چین کی بانسری بجا رہے ہیں ۔ دہشت گرداہم شہروں میں کارروائیوں کر کے جعلی حفاظتی اقدامات کو بے نقاب کر رہے ہیں ۔نام نہاد جمہوری حکومت ملک اورعوام کی حفاظت کرنے میں بری طرح ناکام ہو گئی ہے ۔دریں اثناء پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی صدر ڈاکٹر رحیق عباسی،خرم نواز گنڈا پورنے دہشت گردی کی یکے بعد دیگرے وارداتوں پر گہری تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ موجودہ حکمرانوں کے ہوتے ہوئے دہشت گردی کی لعنت سے چھٹکارا نہیں مل سکتا۔ طاہر القادری

مزید :

صفحہ آخر -