حکومت ایسا احتساب چاہتی ہے جس میں ان سے پوچھ گچھ نہ ہو،علامہ سید سبطین

حکومت ایسا احتساب چاہتی ہے جس میں ان سے پوچھ گچھ نہ ہو،علامہ سید سبطین

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور ( نمائندہ خصوصی )شیعہ علما کونسل پنجاب اور اسلامی تحریک کے صوبائی صدر علامہ سید سبطین حیدر سبزواری نے کہا ہے کہ نیب کے خلاف وزیر اعظم کے بیان اور صوبائی وزیر قانون رانا ثنا اللہ خان کی احتساب ادارے کو کارروائی کی اجازت نہ دینے کی دھمکی سے حکومتی مائنڈ سیٹ واضح ہوگیا ہے کہ وہ ایسااحتساب چاہتے ہیں ، جس میں ان سے پوچھ گچھ نہ ہو۔ یہ رویہ جمہوری نہیں، آمرانہ ہے۔ جسے تبدیل کئے بغیر گوڈ گورننس کے دعوے جھوٹے ہیں۔ جعفریہ یوتھ کے کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے علامہ سبطین سبزواری نے کہا کہ جمہوریت ،آئین اور قانون پر عملدرآمدکا نام ہے، اگر نیب کرپشن کے خلاف کارروائی کرتی ہے ، تو اس کا ٹارگٹ صرف پیپلز پارٹی نہیں ہونی چاہیے، مسلم لیگ ن کے کسی رہنما پر قومی دولت لوٹنے کا الزام ہے تو اس کی تحقیقات میں رکاوٹیں انارکی پھیلانے کی سازش ہے۔

، نیب کو حقیقی معنوں میں خود مختار ادارہ بنانے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم اور اپوزیشن لیڈر کی باہمی مشاورت سے نامزد ہونے والے چیرمین نیب پر عدم اعتماد کا اظہاربتارہا ہے کہ کچھ تو ہے ، جس کی پردہ داری ہے۔ علامہ سبطین سبزواری نے کہا کہ ادویات ساز کمپنیوں کی طرف سے از خود قیمتوں میں اضافے اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں عالمی منڈی کے تناسب سے کمی نہ کرکے عوام کو ریلیف سے محروم رکھا گیا ہے جو کہ ناانصافی ہے۔حکومت عوام کو ریلیف دے، سبزیوں کی قیمتوں میں کمی کے دعوے کے بعد لوگ وزیر اعظم کے پانچ روپے فی کلو والے آلو ڈھونڈ رہے ہیں۔ مگر انہیں کچھ میسر نہیں آیا۔