وزیر اعظم نے اسلام آباد میں 1200بستروں کے نئے ہسپتال کی منظوری دیدی

وزیر اعظم نے اسلام آباد میں 1200بستروں کے نئے ہسپتال کی منظوری دیدی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (اے پی پی) وزیراعظم محمد نواز شریف نے وفاقی دارالحکومت میں صحت عامہ کی سہولیات اور ہسپتالوں کی شدید کمی کے حوالے سے لوگوں کے دیرینہ مطالبے کو پورا کرتے ہوئے اسلام آباد میں 1200 بستروں کے نئے ہسپتال کی منظوری دیدی ہے۔ وزیراعظم ہاؤس کے مطابق وزیراعظم نے اس مقصد کے لئے کری روڈ پر 20 ایکڑ اراضی مختص کرنے کی ہدایت کردی ہے۔ اس عمل کے آغاز کے لئے وزارت صحت کو ضروری ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔ آغا خان فاؤنڈیشن منصوبے کے لئے مفت تکنیکی معاونت فراہم کرے گی جو خصوصی نگہداشت یونٹوں کے لئے 600 بستروں کا حامل ہوگا۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ وفاقی دارالحکومت میں اس وقت پرانے جی سیکٹرز میں ہی ہسپتال ہیں جبکہ کئی برسوں سے شہر مغربی اور جنوبی علاقوں میں کافی پھیل چکا ہے اور درجنوں نئی ہاؤسنگ سوسائٹیوں میں لاکھوں گھر تعمیر ہو چکے ہیں۔ سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کے شدید رش اور صحت عامہ کی دستیاب سہولیات کے حوالے سے عوامی شکایات کے باعث شہر اور اس کے اردگرد علاقوں میں بے قاعدہ نجی ہسپتالوں، کلینکس اور لیبارٹریز کی بھرمار ہوچکی ہے لیکن وہاں پر بھی اکثر مریضوں کو زیادہ اخراجات، ناقص پیشہ وارانہ خدمات اور غیر معیاری سہولیات کی شکایات رہتی ہیں۔ روات جہاں جنوب میں وفاقی دارالحکومت کی حد ختم ہوتی ہے ، وفاقی دارالحکومت کی طرف تقریباً 24 کلو میٹر کی پٹی پر کوئی ایک بھی سرکاری ہسپتال نہیں ہے۔ بالخصوص حادثات اور ایمرجنسی کی صورت میں کسی قسم کی ابتدائی طبی امداد حاصل کرنے کے لئے پرہجوم اسلام آباد ایکسپریس وے کا یہ طویل فاصلہ طے کرنا پڑتا ہے۔ اسی قسم کی صورتحال شہر کے مغرب میں جی ٹی روڈ کے ساتھ واقع جی اور بی سیکٹرز کے رہائشیوں کو درپیش رہتی ہے۔ واضح رہے کہ سرکاری سیکٹر میں پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (پمز )، فیڈرل گورنمنٹ سروسز ہسپتال پولی کلینک، کیپیٹل ہسپتال (سی ڈی اے )، نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ اینڈ نیوکلیئر آن کالوجی اینڈ ریڈیو تھراپی انسٹی ٹیوٹ (نوری) اور چک شہزاد میں نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ (این آئی ایچ) واقع ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -