’آگ کا دریا لاکھوں لوگوں کو بہا کر لے جائے گا‘ شمالی کوریا کا ایسا اقدام کہ قدرت بپھر گئی، سائنسدانوں نے انتہائی تشویشناک انکشاف کردیا

’آگ کا دریا لاکھوں لوگوں کو بہا کر لے جائے گا‘ شمالی کوریا کا ایسا اقدام کہ ...
’آگ کا دریا لاکھوں لوگوں کو بہا کر لے جائے گا‘ شمالی کوریا کا ایسا اقدام کہ قدرت بپھر گئی، سائنسدانوں نے انتہائی تشویشناک انکشاف کردیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

پیانگ یانگ (نیوز ڈیسک) ایٹمی تجربہ کوئی بھی ملک کرے اس کے نتائج خطرناک ہی ہوتے ہیں، لیکن شمالی کوریا کے ایٹمی تجربات نے دنیا کے لئے الگ ہی پریشانی پیدا کر دی ہے۔

مزید جانئے: وہ ملک جس کی سرحدوں میں ترک طیارے 24 گھنٹوں میں 22 مرتبہ زبردستی گھس آئے اور پھر آخر کار ترکی کو زوردار جواب دے دیا گیا، بڑا خطرہ
حال ہی میں اس ملک کی طرف سے ایک دفعہ پھر ایٹمی تجربات کئے گئے، لیکن انتہائی تشویشناک بات یہ تھی کہ یہ دھماکے چین اور شمالی کوریا کی سرحد پر واقع ماﺅنٹ پیکٹو نامی آتش فشاں پہاڑ سے صرف 72 میل کی دوری پر کئے گئے۔ 9ہزار فٹ بلند یہ آتش فشاں اس سے پہلے 1903 میں پھٹا تھا اور سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کے ایٹمی دھماکوں کے بعد اب یہ کسی بھی وقت لاوا اگلنا شروع کر سکتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کے ایٹمی تجربات نے اسے شدید عدم استحکام کا شکار کردیا ہے اور کسی بھی وقت اس میں سے دہکتے ہوئے لاوے کا دریا بہہ نکلے گا جو لاکھوں انسانوں کی ہلاکت کا باعث بن سکتا ہے۔
جنوبی کوریا کے سائنسدان ہونگ تائی کیونگ کی سربراہی میں کام کرنے والی ایک تحقیقاتی ٹیم کا کہنا ہے کہ اس سے پہلے جب شمالی کوریا نے 2006ء، 2009ءاور 2013ءمیں ایٹمی تجربات کئے تو بالترتیب 3.6 ، 4.4اور 4.8شدت کا زلزلہ محسوس کیا گیا۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ہر نئے تجربے کے ساتھ زلزلے کی شدت میں اضافہ ہوتا جارہاہے اور آتش فشاں کے پھٹنے کا خطرہ بھی شدید ہوتا جارہا ہے۔ چینی ماہرین کا بھی کہنا ہے کہ ماﺅنٹ پیکٹو سے سلفر ڈائی آکسائیڈ گیس کا اخراج بڑھ چکا ہے، جو کہ آتش فشاں کے پھٹنے کے حوالے سے ایک پریشان کن اشارہ ہے۔