قصور ویڈیو سکینڈل، 9ویڈیوز ،2میموری کارڈ بطور شہادت عدالت میں پیش کردیئے گئے

قصور ویڈیو سکینڈل، 9ویڈیوز ،2میموری کارڈ بطور شہادت عدالت میں پیش کردیئے گئے
قصور ویڈیو سکینڈل، 9ویڈیوز ،2میموری کارڈ بطور شہادت عدالت میں پیش کردیئے گئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(نامہ نگار) قصور ویڈیوسکینڈل کے مقدمہ میں ملوث12ملزموں کو انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا گیا،پولیس نے9 ویڈیوز اور 2میموری کارڈ بطور شہادت عدالت میں پیش کردیئے ، انسداد دہشت گردی کی عدالت نے کیس کی مزید سماعت 24فروری تک ملتوی کردی ہے۔انسداد دہشت گردی کی عدالت میں قصور پولیس نے ملزمان کے خلاف متعدد مقدمات میں چالان پیش کررکھا ہے۔ چالان میں بچوں پر جنسی تشدد اور ویڈیو بناکر بلیک میل کرنے کا الزام عائد ہے۔ انسداد دہشت گردی کی عدالت نمبر 4کے جج چودھری محمد الیاس کی عدالت میں ملزموں پر فرد جرم عائد ہونے کے بعد شہادتیں قلمبند کی جا رہی ہیں۔ ملزم حسیم عامر، رضوان، عرفان فریدی، وسیم سندھی، مقصود اور عبدالمنان سمیت 12ملزمان کو عدالت میں پیش کیا گیا۔ پراسیکیوشن کی جانب سے متاثرین کے اہل خانہ نے بطور گواہ ملزمان کے خلاف شہادت قلمبند کرائی۔ پولیس نے سکینڈل کی 9 ویڈیوز اور 2 میموری کارڈز بطور شہادت عدالت میں پیشں کئے۔ ملزمان کے وکلاءکا کہنا تھا کہ پولیس نے سازش کے تحت بائیس سے زائد مقدمات بنائے تاکہ معاملے کو سکینڈل کی شکل دی جا سکے۔ عدالت نے گواہوں کے بیانات پر جرح کے لئے سکینڈل کے تمام کیسز کی سماعت چوبیس فروری تک ملتوی کر دی۔

مزید :

لاہور -