جی سی یونیورسٹی میں 117ویں سالانہ کھیلوں کا آغاز

جی سی یونیورسٹی میں 117ویں سالانہ کھیلوں کا آغاز

  

کھیلیں تعلیمی اداروں میں طلباء و طالبات کی ذہنی نشو و نماء اور ان کی تعلیمی سر گرمیوں کو پروان چڑھانے میں بہت اہم کردار ادا کرتی ہیں اور ایسے تعلیمی ادارے جہاں پر نصابی سر گرمیوں کے ساتھ ساتھ بھرپور انداز میں غیر نصابی سر گرمیوں پر زور دیا جاتا ہے اوران کو ایسے مواقع مہیا کیا جاتے ہیں وہ قابل تعریف ہیں اور یہ ہی وجہ یہ ہے کہ ان کا تعلیمی رزلٹ بھی بہت اچھا آتا ہے اور ان میں پڑھنے والے بچے بھی بہت ترقی کرتے ہیں اس کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ کھیلیں انسان کی ضرورت کے لئے بہت اہمیت کی حامل ہوتی ہیں۔ اس سلسلے میں گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہورکی117ویں سالانہ کھیلوں کا آغاز۔افتتاحی تقریب میں طلباء نے ملک بھر کے مختلف علاقوں کی ثقافت کے رنگ بکھیرے۔جی سی یو اوول گراؤنڈ میں منعقدہ افتتاحی تقریب کا آغاز لاہور خودکش حملے کے شہداء کے لیئے ایک منٹ کی خاموشی سے ہوا۔اس موقع پر کھلاڑیوں نے اس عزم کا اظہارکیا کہ وہ ملک میں امن، برداشت اور رواداری کے فرو غ کے لیئے اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے ۔ اس موقع پر جی سی یو کے 29شعبہ جات کے چاق وچوبند دستوں نے مہمان خصوصی وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر حسن امیر شاہ ,چیئرمین سپورٹس بورڈپروفیسرڈاکٹر اکرام الحق اور جی سی یو ڈائریکٹرسپورٹس خادم علی خان کو پر جوش سلامی پیش کی۔جی سی یو شعبہ انجینئرنگ نے بہترین مارچ پاسٹ دستے کا اعزاز حاصل کیا،جبکہ شعبہ سیاسیات دوسرے نمبر پر رہا۔رواں سال جی سی یو میں زیرِ تعلیم معذور بچوں کے خصوصی دستے نے بھی مارچ پاسٹ میں حصہ لیا۔شعبہ سیاسیات کے دستے میں جی سی یو میں زیرِ تعلیم ایک جاپانی طالبعلم اور چائینز اساتذہ بھی شریک تھی۔اس موقع پر وائس چانسلر کاکہنا تھا کہ طلباء کی تربیت اور انہیں برداشت کا سبق دینے کے لیئے سپورٹس انتہائی اہم ہے ۔انہوں نے کہا کہ جی سی یو کے کھلاڑی عالمی سطح پر بھی ملک کا نام روشن کر رہے ہیں اور مجھے خوشی ہے کہ رواں سال مارچ پاسٹ کی قیادت ایک خاتون کھلاڑی نے کی ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ کہ رواں سال پہلی مرتبہ دوخواتین کھلاڑیوں کی سپورٹس میں عالمی سطح پر اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے پر رول آف آنرز سے بھی نوازا گیا۔تین روز تک جاری رہنے والے کھیلوں کے پہلے روز3000میٹر ریس میں شعبہ فائن آرٹس کے وسیم اکرم اول رہے۔بوائز200 میٹر ریس میں شعبہ معاشیات کے سبحان مسعود نے سب سے پہلے اختتامی لائن عبور کی، جبکہ شا ٹ پٹ میں شعبہ فائن آرٹس کے قیصر عباس نے پہلی پوزیشن حاصل کی۔ کھیلوں کا اختتام آج جی سی یو اوول گراؤنڈمیں منعقدہ تقریب میں ہوگا۔اس موقع پر نائب قاصد ریس،فی میل سٹاف ریس،چاٹی ریس،پیلو فائٹنگ، بوری ریس اور میوزیکل چئیر سمیت مختلف رنگا رنگ جم خانہ مقابلوں کا انعقاد بھی کیا گیا ہے۔ ان جم خانہ مقابلوں میں اولڈ روائینز بھی حصہ لیں گے۔گورنمنٹ کالج یونیورسٹی کے ڈائریکٹر سپورٹس خادم علی خان نے اس ایونٹ کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ماضی کی طرح اس مرتبہ بھی یہ گیمز بہت کامیاب رہی ہے اور جس طرح سے کھلاڑیوں نے مختلف کھیلوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا جتنی بھی تعریف کی جائے کم ہے انہوں نے کہا کہ ااس کالج کی یہ روائت رہی ہے کہ اچھی تعلیم کے ساتھ ساتھ طالب علموں کو کھیلوں کے لئے بھی بہت اچھے مواقع فراہم کئے جاتے ہیں اور اس حوالے سے ہم مستقبل میں بھی اسی طرح سے یہ سلسلہ جاری رکھنے کی کوشش کریں گے انہوں نے مزید کہا کہ تعلیمی اداروں میں کھیلوں کے مقابلے بہت ضروری ہیں انہوں نے اس موقع پر مزید کہا کہ آج ایونٹ کے آخری روز اچھی پرفارمنس دینے والے طلباء و طالبات میں جو اچھی پرفارمنس دیں گے ان میں انعامات دیں گے تاکہ ان میں مزید حوصلہ پیدا ہو۔

مزید :

ایڈیشن 1 -