جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام میں ہفتے کو5ویں روز بھی مکمل ہڑتال رہی

جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام میں ہفتے کو5ویں روز بھی مکمل ہڑتال رہی

  

سری نگر(کے پی آئی) جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام میں ہفتے کو5ویں روز بھی مکمل ہڑتال رہی جس کے دوران تمام کاروباری ادارے اور مراکز بند رہے جبکہ شہید نوجوانوں اور شہریوں کے گھروں میں تعزیت پرسی کا سلسلہ جاری رہا ادھر مقبوضہ کشمیر کے کئی مقامات پر بھارت کے خلاف مطاہرے ہوئے شوپیاں اور اسلام آباد میں اضافی فورسز اور پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا گیا تھا سری نگر میں جامع مسجد اور اسکے نواحی علاقوں میں احتجاجی مظاہرین اور فورسز کے درمیان ہوئی جھڑپوں میں10افراد زخمی ہوئے۔ حیدر پورہ میں تحریک حریت کے سینئر لیڈر پیر سیف اللہ کی قیادت میں ایک احتجاجی جلوس نکالنے کی کوشش کی ، جس میں محمد یوسف مجاہد ، سید امتیاز حیدر اور غازی جاوید بابا کے علاوہ دیگر کچھ مزاحمتی کارکن بھی شامل تھے۔

پولیس نے جلوس نکالنے کی اجازت نہیں دی ، جس کے بعد پولیس اور مظاہرین کے درمیان ہاتھا پائی کی صورتحال پیدا ہوئی تاہم پولیس کی طرف سے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کیلئے ہلکا لاٹھی چارج کیا گیا ۔ لبریشن فرنٹ اراکین نے زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی بڑی تعداد کے ہمراہ بڈشاہ چوک لال چوک پر حالیہ عام شہری ہلاکتوں کے خلاف ایک پرامن احتجاجی دھرنا دیا ۔ شمالی کشمیر قصبہ سوپور کے حساس علاقوں میں فورسز کی اضافی نفری کی تعینات عمل میں لائی گئی،جن میں مین چوک ،مین بازار ،بٹہ پورہ شامل ہے۔

مزید :

عالمی منظر -