دہشتگرد پاکستان کی ترقی کا راستہ نہیں روک سکتے ،ممنون حسین

دہشتگرد پاکستان کی ترقی کا راستہ نہیں روک سکتے ،ممنون حسین

  

 کراچی(آن لائن)صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ دہشت گرد پاکستان کی ترقی کا راستہ نہیں روک سکتے، پاکستانی عوام اپنے اتحاد سے ترقی کے خلاف ہر سازش کو ناکام بنا دیں گے، دہشت گردوں کو جانتے ہیں ان کی کمیں گاہوں تک پیچھا کیا جائے گا اور ان کے سرپرستوں کو بھی انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا، بے گناہوں کے خون کا حساب لیا جائے گا، ملک کے مختلف حصوں مین جاری آپریشن آخری دہشت گرد کے خاتمے تک جاری رہیں گے،قوم منفی سوچ پھیلانے والوں سے بچے۔صدر مملکت ممنون حسین نے سندھ مدرستہ السلام یونیورسٹی کے پہلے کانووکیشن سے ہفتہ کے روز خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی سمت درست ہے اور ملک ترقی کر رہا ہے، وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے تعاون سے ترقی کے مزید مواقع پیدا ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان نئے دور کے تقاضوں سے عہدہ برآں ہونے کے لئے خود کو تیار کریں، تعلیمی نصاب میں قومی مقاصد کے مطابق تبدیلیاں کی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ اقتصادی راہداری کے روٹ میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ، اقتصادی راہداری کی تکمیل کے بعد پاکستان خطے کا سب سے اہم ملک بن جائے گا، ہمسایہ ممالک کو ترقی کے عمل میں کھلے دل سے شریک کرنا چاہتے ہیں۔صدر مملکت ممنون حسین نے کہا کہ کراچی میں گرین لائن بس سروس کا منصوبہ اس سال کے آخر تک مکمل ہو جائے گا۔ ملک کے مختلف حصوں میں گزشتہ چند روز میں رونما ہونے والے دہشت گردی کے واقعات کا ذکر کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ بے رحم دہشت گردوں نے درجنوں جیتے جاگتے انسانوں، عورتوں اور بچوں کو موت کی نیند سلا دیا۔ انہوں نے کہا کہ دو روز قبل سیہون شریف اور اس سے قبل لاہور، پشاور ، بلوچستان اور مہمند ایجنسی میں رونما ہونے والے دہشت گردی کے واقعات میں شہید ہونے والے تمام افراد کے اہلِ خانہ کو یقین دلاتے ہیں کہ دکھ کی ان گھڑیوں میں وہ تنہا نہیں ہیں بلکہ پوری قوم ان کے غم میں برابر کی شریک ہے اور شہیدوں کی بلندء درجات، لواحقین کے لئے صبرِجمیل اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لئے دعاگو ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے واقعہ میں نجی ٹی وی چینل کی گاڑی پر فائرنگ کے نتیجے میں تکنیکی عملے کے جواں سال رکن تیمور خان بھی شہید ہوئے ہیں، ہم اْن کے اہلِ خانہ سے بھی تعزیت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی قوم دہشت گردی کی حالیہ لہر کے مقاصد اور اس کی حکمت عملی سے پوری طرح آگاہ ہے، اس حقیقت میں کوئی شبہ نہیں ہے کہ دشمن نے اس خطے اور بالخصوص وطنِ عزیز میں ترقی اور خوش حالی کے عمل کو پہلے اختلافات پیدا کر کے روکنے کی کوشش کی اور اس میں ناکامی کے بعد دہشت گردی کا سلسلہ شروع کر دیا گیا لیکن ہم واضح کردینا چاہتے ہیں کہ پاکستانی عوام اپنے اتحاد سے پہلی مذموم سازش کی طرح اس ناپاک کوشش کو بھی ناکام بنا دیں گے۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری سمیت ترقی اور خوشحالی کے دیگر تمام منصوبوں کا تعلق صرف پاکستان اور چین سے نہیں اور نہ ہی ان کے ثمرات کو دونوں ملکوں تک محدود کرنے کا کوئی ارادہ رکھتے ہیں، یہی وجہ ہے کہ پاکستان اور چین کی قیادت نے پوری دنیا کو ان منصوبوں کے ثمرات سے استفادے کی کھلی پیشکش کی ہے جسے اقوام عالم نے خوش دلی سے قبول کیا ہے اور راہداری سے منسلک ہونے کی تیاریاں شروع کر دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری پیشکش کو قبول کر کے دیگر ممالک بھی اپنے ملک اور عوام کی خوشحالی کو یقینی بنا سکتے ہیں، لیکن اس کے ساتھ ہی ہم اْن تمام منفی قوتوں کو متنبہ کرتے ہیں کہ اْن کے تخریبی ہتھ کنڈوں سے ان ترقیاتی منصوبوں پر کوئی آنچ نہیں آئے گی اور یہ منصوبے ضرور پروان چڑھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس پس منظر میں پاکستان اور اْس کے عوام پر بھاری ذمہ داری عائد ہوگئی ہے، ہمارے سامنے سب سے بڑا چیلنج یہ ہے کہ دشمن کے تمام منفی ہتھ کنڈوں اور سازشوں کے باوجود پاکستان اور خطے کی ترقی کی ضمانت بننے والے ان مواقعوں کو حقیقت میں تبدیل کر دیا جائے، اس سلسلے میں پاکستان کی قیادت اور ریاستی ادارے اپنی ذمہ داری سے غافل نہیں لیکن اس کے ساتھ ہی یہ بھی ضروری ہے کہ عوام اپنے حوصلے بلند رکھیں اور نوجوانوں کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ اْن تمام شعبوں میں مہارت حاصل کریں جو اقتصادی راہداری اور دیگر ترقیاتی منصوبوں کی کامیابی کے لئے ناگزیر ہیں کیونکہ ان منصوبوں کا تعلق صرف حال سے نہیں بلکہ ہمارے مستقبل سے ہے۔ بعد ازاں صدر مملکت نے نمایاں پوزیشن حاصل کرنے والے طلبہ میں ایوارڈ بھی تقسیم کئے۔ اس موقع پر گورنر سندھ زبیر احمد بھی موجود تھے۔

ممنون حسین

مزید :

علاقائی -