بھارتی وزیر کیخلاف بداخلاقی کا مقدمہ

بھارتی وزیر کیخلاف بداخلاقی کا مقدمہ
 بھارتی وزیر کیخلاف بداخلاقی کا مقدمہ

  

لکھنؤ (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی سپریم کورٹ کے حکم پر اتر پردیش میں حکمران جماعت سماج وادی پارٹی کے وزیر گائتری پراج پتی اور اس کے 6 ساتھیوں کے خلاف ایک خاتون سے اجتماعی زیادتی اور اس کی نابالغ بیٹی پر جنسی حملہ کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیا گیا۔بھارتی میڈیا کے مطابق ایک خاتون کی جانب سے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی گئی تھی۔ خاتون نے اپنی درخواست میں الزام عائد کیا تھا کہ سماجی وادی پارٹی کے وزیر گائتری پراج پتی اور اس کے 6 ساتھیوں نے اسے کئی بار اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔ خاتون کی جانب سے دی جانے والی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ اسے پہلی بار اکتوبر 2014 میں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور یہ سلسلہ جولائی 2016 تک جاری رہا۔خاتون نے اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی پر کافی عرصے تک خاموشی اختیار کیے رکھی لیکن جب ملزمان نے اس کی نا بالغ بیٹی کے ساتھ بھی زیادتی کرنے کی کوشش کی تو اس نے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹا دیا۔بھارتی سپریم کورٹ نے خاتون کی درخواست پر سماج وادی پارٹی کے وزیر اور اس کے ساتھیوں کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا جس کے بعد لکھنؤ کے گوتم پالی پولیس سٹیشن میں ان کے خلاف مقدمہ درج کرکے واقعے کی تحقیقات کا آغاز کردیا گیا۔

بھارتی وزیر

مزید :

صفحہ اول -