دہشتگردی کی حالیہ لہر کے پیش نظر ،داتا دربار سمیت اہم مزارات کی سیکیورٹی میں اضافہ

دہشتگردی کی حالیہ لہر کے پیش نظر ،داتا دربار سمیت اہم مزارات کی سیکیورٹی میں ...

  

لاہور(وقائع نگار)سڑکوں پر چیک پوسٹیں قائم کردی گئیں،سی سی پی او نے تمام ڈویژنل ایس پیز کوسیکیورٹی چیک کرنے کی ہدایت کردی ، محکمہ اوقاف کی جانب سے سیکیورٹی گارڈز اور خفیہ کیمروں کی مدد سے مزاروں کی نگرانی شروع کر دی ۔دو روز قبل بند کئے جانے والے مزارات کو وزیر داخلہ چودھری نثار کے حکم پر دوبارہ کھولنے کا کام جاری ہے اور صوبائی دارالحکومت میں واقع چندمزاروں کو جزوی طور پر کھول دیا گیا تاہم بیشتر دربار تاحال بند ہیں ۔ جزوی طور پرکھلنے والے درباروں میں ایک سے دودروازے کھولے گئے ہیں جہاں سے مکمل تلاشی کے بعد زائرین کو داخلے کی اجازت دی جا رہی ہے۔دوسری جانب سیکیورٹی پر مامور پولیس اہلکار کئی مقامات پر دوران ڈیوٹی فرائض سے غافل پائے گئے ۔تفصیلات کے مطابق مال روڈ دھماکے اور بعد ازاں سیہون شریف میں لعل شہباز قلندر پر خود کش حملے کے بعدمحکمہ اوقاف نے پنجاب بھر کے 450مزارات کی سیکیورٹی بڑھانے کا فیصلہ کیا جبکہ بی بی پاک دامن کے مزار کو زائرین کے لئے بند کر دیا گیا تھا لیکن گزشتہ روزوفاقی وزیر داخلہ کے حکم پر درباروں کو جزوی طور پر کھولنے کا سلسلہ شروع کر دیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق سی سی پی او لاہور امین وینس کی طرف سے تمام ڈویژنل ایس پیز کو اپنے علاقے میں واقع مزاروں کی سیکیورٹی خود چیک کرنے اور مزید بہتر بنانے کی ہدایت کی گئی ہے اور ایس پیز ڈیوٹی پر مامور پولیس اہلکاروں اور رضا کاروں کو الرٹ رہنے کی ہدایت کریں۔ محکمہ اوقاف کے ترجمان کے مطابق ملک میں جاری دہشت گردی کے خطرہ کے باعث پنجاب کے تمام مزاروں میں سائلین کی حفاظت کیلئے سیکیورٹی کا خاص اہتمام کیا گیا ہے جبکہ خفیہ کیمروں کی بدولت ریکارڈنگ کے ذریعے مانیٹرنگ کا عمل بھی جاری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مزارات سمیت پر زائرین کی بڑی تعداد حاضری دینے کیلئے درگاہوں کے باہرموجود تھی لہٰذازائرین کو داخلے کی اجازت دیدی گئی ہے جبکہ درباروں کی سیکیورٹی کیلئے نہ صرف پولیس سے نفری حاصل کی گئی ہے بلکہ اوقاف کی جانب سے بھی سیکیورٹی گارڈز تعینات کئے گئے ہیں۔روزنامہ" پاکستان" کی تحقیقات کے مطابق شاہ جمال ،بی بی پاک دامن سمیت متعدد مزار تاحال بند ہیں البتہ داتا دربار کے دو گیٹس پورا دن کھلے رہے جہاں سخت سیکیورٹی انتطامات تھے اور زائرین کو چیکنگ کے بعد اندر داخل ہونے دیا جا رہا تھا۔انتظامیہ نے 140 وی آئی پی سیکیورٹی پاسز کو منسوخ کرتے ہوئے ہر قسم کی گاڑی کا داخلہ بند کر دیا۔مذکورہ پاسز کے حامل زائرین اور عقیدت مند اپنی گاڑیاں داتا دربار کے تہہ خانے میں کھڑی کر سکتے تھے تاہم سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر محکمہ اوقاف و مذہبی امور پنجاب انتظامیہ نے پاسز منسوخ کر کے ہر قسم کی گاڑی کا داخلہ بند کر دیا ہے۔ایڈمنسٹریٹر داتا دربار ڈاکٹر نور محمد اعوان نے بتایا کہ سیکیورٹی انتظامات کے لئے سی سی ٹی وی کیمروں میں اضافہ کیا گیا، مجموعی طور پر 110 کیمروں سے مانیٹرنگ کی جا رہی ہے، جمعتہ المبارک کی ادائیگی کیلئے بھی سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ۔انہوں نے کہا کہ کربلا گامے شاہ سے داتا دربار میں خواتین گیٹ تک سڑک کو بند کرکے پولیس اہلکاروں کیساتھ ساتھ ریسکیو1122 کے اہلکاروں کی ڈیوٹیاں بھی لگائی گئی ہیں۔علاوہ ازیں شاہ جمال دربار اور بی بی پاک دامن کے آس پاس کی شاہراہوں پر بھی پولیس کی جانب سے ناکے لگائے گئے اور لوگوں کو داخل نہیں ہونے دیا گیا۔

لاہور/مزارات

مزید :

صفحہ اول -