ریلوے کی 48ارب 70کروڑ روپے کی 11سوایکڑاراضی پر مافیا کا قبضہ

ریلوے کی 48ارب 70کروڑ روپے کی 11سوایکڑاراضی پر مافیا کا قبضہ

  

 لاہور(بلال چوہدری) پاکستان ریلویز کئی دہائیاں گزرنے کے باوجود اراضی پر موجود قبضہ مافیا کیخلاف موثر کارروائی کرنے میں ناکام رہا۔ ملک بھرمیں48 ارب 70کروڑروپے مالیت سے زائد کی گیارہ سوایکڑسے زائد قیمتی اراضی پرغیرقانونی قبضہ ہے۔پاکستان ریلویزکے کراچی، لاہور، ملتان اور پشاورڈویثرنوں میں اربوں روپے مالیت کی اراضی کا قبضہ ریلوے حکام تاحال واگزارکرانے میں ناکام ہیں۔رواں سال جاری کی گئی ریلوے آڈٹ رپورٹ میں نشاندہی کی گئی تھی کہ پاکستان ریلویزکی راضی پر تجاوزات میں خطرناک حد تک اضافہ ہوا ہے اور ریلویز انتظامیہ تجاوزات روکنے میں ناکام رہی ہے۔ رپورٹ کے مطابق پاکستان ریلویزکے لاہور ڈویڑن میں44 ارب 69کروڑ 11لاکھ روپے سے زائد مالیت کی 825 ایکڑ اراضی پر غیر مجاز قبضہ ہے جس میں سے 302ایکڑ اراضی پر رہائشی قبضہ ہے،دس ایکڑاراضی پرکمرشل اور 513 ایکڑ اراضی پر زرعی تجاوزات ہیں۔پاکستان ریلویزکے ملتان ڈویڑن میں ایک ارب 83کروڑ 93 لاکھ روپے سے زائد مالیت کی 153ایکڑسے زائد اراضی پر ناجائز تجاوزات ہیں جس پرکچی آبادیوں سمیت مختلف پارٹیوں نے قبضہ کیا ہوا ہے۔پاکستان ریلویزکے پشاورڈویڑن میں 29کروڑ روپے سے زائد مالیت کی17.309کنال اراضی پر تجاوزات ہیں جس پرصوبہ خیبرپختونخواحکومت کے مواصلات و ورکس ڈیپارٹمنٹ ہائی وے ونگ مردان نے غیر قانونی قبضہ کیا ہے۔ کوہاٹ میں 2005میں تین کروڑ 54لاکھ روپے مالیت کی 55.43کنال اراضی پرکیڈٹ کالج نے تجاوز کرتے ہوئے کالج کی باؤنڈری دیوار بنادی ہے۔پاکستان ریلویزکے پشاور ڈویڑن ہی میں خیبر پختونخوا حکومت نے 2کروڑ 36لاکھ روپے سے زائد مالیت کی91.638کنال قیمتی اراضی پر سڑکوں کی تعمیر کی۔پشاور ڈویڑن میں جمرود روڈ پر تہکال بالا حیات آباد میں ستمبر 2012 میں ریلویز اراضی پر تجاوزکرکے میسرز ڈینزکمپلیکس فار فلارز اینڈسلک ایگزیکٹو اپارٹمنٹس تعمیرکیے گئے۔پاکستان ریلویزکے کراچی ڈویڑن میں2ارب 82 لاکھ روپے سے زائد مالیت کی 43.11ایکڑاراضی پرجمعہ گوٹھ کے مقام پر ایک ٹیکسٹائل ملزکا قبضہ ہے اور کیس نیب سندھ کو بھجوایا گیا ہے۔پاکستان ریلویز کراچی ڈویڑن میں 18لاکھ روپے سے زائد مالیت کی181.33مربع گز اراضی پر مشتمل ریلویز کی رہائشی بلڈنگ پر سندھ پولیس نے غیرقانونی طور پر قبضہ کررکھا ہے لیکن پاکستان ریلویز حکام نے نوٹس نہیں لیا۔ذرائع کے مطابق پاکستان ریلوے نے گزشتہ دس برس کے دوران پانچ ہزار ایکڑ اراضی قبضہ مافیا سے واگزار کرائی جبکہ چار ہزار ایکڑ سے زائداراضی پر قبضہ مافیا نے ابھی تک قبضہ جما رکھا ہے اسی طرح صوبائی اور وفاقی سرکاری اداروں نے بھی پاکستان ریلوے کی زمینوں پر قبضہ کر رکھا ہے تاہم بعض سرکاری اداروں سے زمین ریگولائز کرا لی گئی ہے۔پاکستان ریلوے کو چاروں صوبوں میں موجود اراضی سے 4ارب65کروڑ 40لاکھ روپے کی وصولیاں ہوئی ہیں۔ اس حوالے سے پاکستان ریلویز کے حکام کا کہنا ہے کہ پاکستان ریلوے نے قبضہ مافیا سے قبضے چھڑانے کے لئے نیاایکشن پلان مرتب کیا ہے آئندہ جوبھی ریلوے کی زمین پر قبضہ کریگا اس کیخلاف مقدمہ درج کرایا جائے گااور پھر اس مقدمے کو ریلوے کے جوڈیشل مجسٹریٹ کے پاس سماعت کے لئے بھجوایا جائے گا۔علاوہ ازیں وزارت ریلوے نے ملک بھر سے ریلوے کی اربوں روپے کی قیمتی اراضی قبضہ مافیا سے واگزار کرانے کے لئے سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیاہے ۔

ریلوے کی اراضی

مزید :

صفحہ اول -