دہشتگردی ملک کو غیر مستحکم کرنیکی سازش ہے

دہشتگردی ملک کو غیر مستحکم کرنیکی سازش ہے

  

ملتان،ڈیرہ غازی خان(سٹی رپورٹر، بیورو رپورٹ)شیعہ(بقیہ نمبر32صفحہ12پر )

علما کونسل پنجاب کے صدر سید سبطین حیدر سبزواری نے کہا ہے کہ پاکستان میں شیعہ سنی کی کوئی لڑائی نہیں ہے پاکستان کوغیر مستحکم کرنے کے لئے دہشت گردی کو ہوا دی جارہی ہے سہیون شریف سمیت پاکستان میں ہونے والی دہشت گردی کی شدید مذمت کرتے ہیں پاکستان کے تمام شہری صبر کا مظاہرہ کرتے ہوئے انتظامیہ کے ہاتھ مضبوط کریں تاکہ شدت پسندوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جا سکے حکمران اولیاء کرام کی درگاہوں پر سیکورٹی کے سخت انتظامات اور زائرین کو تحفظ فراہم کرے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز میڈیاسے گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر شیعہ علماء کونسل کے ترجمان سید بشارت عباس قریشی ، صا بر حسین سمیت بھی ہمراہ تھے اس موقع پرانہوں نے مزید کہاہے کہ نیشنل ایکشن پلان پر من وعن عمل در آمد وقت کی ضرورت بن چکا ہے تاکہ ملک دشمن عناصر کو خاتمہ کیا جاسکے انہوں نے کہاہے کہ دہشت گردی کے ناسور کو ختم کرنے کے لئے سخت فیصلے کرنا ہوں گے۔ فوجی عدالتیں جمہوری حکومت میں مناسب نہیں ، لیکن لگتا ہے کہ موجود ہ حالات میں زہر کا پیالا پینا ہی ہوگا۔ مزارات اولیا کی سکیورٹی رینجرز کے حوالے کی جائے۔ پنجاب اسمبلی ، مہمند ایجنسی ، پشاور، کوئٹہ اور دربار لعل شہباز قلندر پر بم دھماکے اور مظفرآباد میں علامہ تصور حسین جوادی پر قاتلانہ حملہ نیشنل ایکشن پلان کی کامیابی کے دعووں کی نفی ، سکیورٹی اداروں کی کارکردگی اور سیاسی قیادت کی ترجیحات پر سوالیہ نشان ہے۔دریں اثناء شیعہ علماء کونسل صوبائی صدرپنجاب علامہ سبطین سبزواری پاکستان کا کوئی شہر دہشت گردوں سے محفوظ نہیں ہرطرف کربلا برپا کر کے مسلمانوں کو گاجر مولی کی طرح کاٹا جارہاہے ہر طرف خون کی حولی کھیلی جارہی ہے شہباز قلندر خودکش حملہ بربریت کی بدترین مثال ہے متاثرہ خاندان سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے واقع کی پر زور مذمت کرتے ہیں دہشت گرد پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کے لیے امریکی‘ اسرائیلی اور بھارتی ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں‘ اہل اقتدار امریکہ کو نجات دہندہ اور دوست تصور کرتے ہیں جبکہ اس سامراج دوستی نے ہمیں تباہی کے سوا کچھ نہیں دیا ہے پنجاب فرقہ واریت کا سب سے بڑا مرکز ہے دہشت گردوں کے خاتمے کے لیے بلاتفریق آرمی آپریشن کرکے ظالم درندوں اور سہولت کاروں کو بے نقاب کرکے کیفر کردار تک پہنچایا جائے یہ بات انہوں نے مرکزی امام بارگاہ رضویہ ڈیرہ غازیخان میں مرحوم پرفیسر خادم حُسین لغاری رسم چہلم کے موقع پر شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہی اس موقع پر علامہ محمد رمضان توقیر ، علامہ موسٰی رضا جسکانی ،سید ندیم حیدر نقوی ایڈووکیٹ ،مولانا سید منور حسن نقوی ،مولانا اقبال بلوچ ،مولانا احسان علی اتحادی ،مولانانجم الحسن خان ،مولاناثقلین خان بلوچ نے بھی خطاب کیا ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -