خیبر ایجنسی ،پاک افغان بارڈر بندش ،گاڑیوں کی لمبی قطاریں

خیبر ایجنسی ،پاک افغان بارڈر بندش ،گاڑیوں کی لمبی قطاریں

  

خیبر ایجنسی (بیورورپورٹ)پاک افغان بارڈر بند ہونے کی وجہ پشاور اور لنڈیکوتل میں زیادہ لوگ پھنس گئے ،زیادہ تر لوگ ٹرانسپورٹ اڈوں اور ہسپتالوں سے ڈسچارج مریض بھی افغانستا ن جانے کی انتظار میں ہیں،تاہم خیر سگالی کے تحت سیکورٹی فورسز نے پاکستان میں جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین اور میتوں کو افغانستان جانے کی جازت دی گئی ،طورخم ذرائعپاک افغان بارڈر طورخم بند ہونے کی وجہ سے تجاری سر گر میاں بری طرح متاثر ہو گئی ہیں اور تقریبا کسٹم ذرائع کے مطابق کہ کسٹم کی مد میں سات ملین کا نقصان ہو رہا ہیں جبکہ لوکل ٹرانسپورٹ سمیت افغانستا ن کو سپلائی کرنے والی ٹرالر زاور دوسرے بڑی گاڑیاں بھی کھڑے ہو گئے ہیں اور طورخم میں ہوٹلز اور دوسرے مارکیٹ سمیت کسٹم کلئیر نس ایجنٹس کی دفاتر اور کام بھی بند ہو گئی ہیں بارڈر بند ش سے پشاور اور لنڈیکوتل سمیت جلال میں بھی ہزاروں لوگ جانے کی انتظار میں بیٹھے ہیں زیا دہ تر مریض پشاور میں ہسپتالوں سے ڈسچارج ہو گئے ہیں جو اب ٹرانسپورٹ اڈوں اور ہوٹلوں میں جانے کی انتطار میں ہیں جبکہ ٹرانسپورٹرز ڈرائیوارز اور کلینرز گاڑیوں کے ساتھ شاہر اہ پر ڈیرے ڈال دئیے ہیں بارڈر کھلنے کا انتظار کر رہے ہیں گاڑیوں ڈارئیوار کے مطابق کہ سبزی اور فروٹ سے گاڑیاں بھری پڑی ہیں جو خراب ہونے کا خدشہ ہیں ڈرائیوارز نے مطالبہ کیا کہ مال سے بھری ہوئی گاڑیوں کو جانے کی اجازت دیں اور اسکے بعد بند کریں اور ٹرانسپوٹروں کو طلاع کرکے لوڈنگ بند کریں واضح رہے کہ سیکورٹی فورسز نے خیر سگالی کے تحت پاکستان میں جاں بحق ہونے میتوں اور انکے لواحقین کو افغانستا ن جانے کی اجازت دے دی گئی ہیں اور دو دنوں میں تقریبا گیارہ میتیں افغانستان لے گئے ہیں

مزید :

کراچی صفحہ اول -