انسانی اعضا بکھرنے میں سندھ حکومت کا ہاتھ نہیں ،مولا بخش چانڈیو

انسانی اعضا بکھرنے میں سندھ حکومت کا ہاتھ نہیں ،مولا بخش چانڈیو

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹرین کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات مولا بخش چانڈیو نے کہا ہے کہ سیہون شریف میں دہشت گردی کے بعد وہاں سے انسانی اعضا کو ان کے تقدس کے مطابق جمع کیا گیا تھا ۔انسانی اعضا کے بکھرنے میں سندھ حکومت کی کوئی کوتاہی یا غفلت نہیں ہے ۔انسانی اعضا کچرے کے ڈھیروں سے ملنے کی باتیں کرنے والے شہدا کے ورثاء کا دل دکھارہے ہیں ۔ہفتہ کو جاری ایک بیان میں مولا بخش چانڈیو نے کہا کہ سانحہ سیہون شریف کے اندوہناک اور دل خراش واقعہ کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔انسانیت کے دشمن سفاک دہشتگردوں نے بزرگ ہستی کے مزار پر خون کی ہولی کھیلی ہے ۔انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کے اتنے بڑے واقعہ اور خون کی ہولی کے نتیجے میں انسانی اعضا کا بکھرنا معمول تھا ۔انسانی اعضا کے بکھرنے میں سندھ حکومت کی کوئی کوتاہی یا غفلت نہیں ہے ۔دہشتگردی کے واقعہ کے بعد قانونی تقاضے پورے کرنے کے لئے متاثرہ جگہ کو مطلوبہ وقت تک صاف نہیں کیا جاتا ہے ۔دہشتگردی کے واقعہ کے بعد وہاں سے انسانی اعضا کو انکے تقدس کے مطابق جمع کرلیا گیا تھا۔انسانی اعضا کے کچرے کے ڈھیروں میں ملنے کی باتیں کرنے والے کس کے دوست ہیں ؟؟خدارا ایسی باتیں پھیلا کر سانحہ کے شہدا کے ورثا کا دل نہ دکھایا جائے۔انہوں نے کہا کہ ہولناک سانحہ میں شہید ہونے والے افراد کے اہل خانہ جانتے ہیں یا انکا خدا کہ ان پر کیا قیامت گزر رہی ہے خدارا انسانیت ہی کے ناطے سہی اس حساس معاملے پر سیاست سے گریز کیا جائے۔سندھ حکومت پر بیشک تنقید کرلیں مگر اس انسانیت دشمن عمل کا حصہ ہرگز نہ بنا جائے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -