سینے کے باہر دل کے ساتھ زندگی گزارنے والی روسی بچّی

سینے کے باہر دل کے ساتھ زندگی گزارنے والی روسی بچّی
سینے کے باہر دل کے ساتھ زندگی گزارنے والی روسی بچّی

  

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک)سینے کے باہر دل کے ساتھ پیدا ہونے والی سات سالہ روسی بچی ویرسافیا بورن اس امید کے ساتھ امریکا پہنچی ہے کہ اس کا ایک آپریشن ہو جس کے بعد وہ عام انسانوں کی طرح زندگی گزار سکے۔طبی ماہرین کے مطابق دنیا بھر میں ہر 10 لاکھ میں سے صرف 5 افراد اس نادر مسئلے سے دوچار ہوتے ہیں۔ بورن کی پیدائش کے وقت ہی ڈاکٹروں نے اس کے والدین کو واضح کر دیا تھا انہیں بدترین صورت حال کے لیے ذہنی طور پر تیار رہنا چاہیے تاہم تمام تر مسائل کے ساتھ ابھی تک کا وقت خیریت سے گزر گیا ہے۔بورن کو حال ہی میں امریکا منتقل کیا گیا ہے تاکہ اس کے بلند فشار خون کو کم کرنے کے لیے علاج فراہم کیا جائے۔امید پر کہ یہ پیش رفت بعد ازاں ایک آپریشن کے کیے جانے میں مددگار ثابت ہوگی جس سے بورن کی زندگی موجودہ حالت سے بہت بہتر ہو جائے گی۔بچی نے برطانونی نشریاتی ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ " یہ رہا میرا دل.. میں اس طرح جینے والی واحد انسان ہوں۔ میں چل سکتی ہوں ، اچھل سکتی ہوں یہاں تک کہ دوڑ بھی سکتی ہوں مگر میری آرزو ہے کہ میں خوب تیز چل سکوں اور اڑان بھروں"۔بون کا کہنا ہے کہ وہ صرف ہلکے پھلکے کپڑے پہنتی ہے تاکہ اس کا دل متاثر نہ ہو۔

مزید :

ملتان صفحہ اول -