دہشتگردی اور سنگین جرائم میں ملوث 348قیدیوں کی پھانسی کی سزاﺅں پر عملدرآمد کا فیصلہ

دہشتگردی اور سنگین جرائم میں ملوث 348قیدیوں کی پھانسی کی سزاﺅں پر عملدرآمد کا ...
دہشتگردی اور سنگین جرائم میں ملوث 348قیدیوں کی پھانسی کی سزاﺅں پر عملدرآمد کا فیصلہ

  

راولپنڈی(ڈیلی پاکستان آن لائن )حکومت نے دہشگردی اور سنگین جرائم میں ملوث ملک بھر کی جیلوں میں موجود348 قیدیوں کی پھانسی کی سزاﺅں پر عملدرآمد کا فیصلہ کر لیا۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق سینٹرل جیل اڈیالہ سمیت ملک بھرکی جیلوں میں پھانسی کی سزاﺅں کے منتظر سنگین ترین مقدمات کے 138 دہشت گردوں اور قتل، ڈکیتی، اغوا برائے تاوان کی وارداتوں میں پھانسی کی سزائیں پانے والے 210 قیدیوں کو پھانسیاں دینے کا عمل شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

TapMad نے ہمہ وقت سرگرم رہنے والوں کے لئے انٹرٹینمنٹ کی نئی دنیا متعارف کروادی

ذرائع کا کہنا ہے کہ سنگین ترین مقدمات میں پھانسی کی سزا پانے والے 16 مجرموں کی رحم کی اپیلیں صدر کے پاس زیر التوا ہیں جبکہ سپریم کورٹ سے جن ملزمان کی پھانسی کے خلاف اپیلیں مسترد ہوچکی ہیںان سب کی فہرستیں طلب کر لی گئی ہیں تاہم اڈیالہ جیل میں قید 11 دہشت گردوں کا سیل مکمل طور پر الگ کردیا گیا ہے جہاں تک عام قیدیوں کی رسائی بھی ختم کردی گئی ہے اور ان کی بیرک کی سیکیورٹی انتہائی سخت کرتے ہوئے وہاں کمانڈوز تعینات کردیے گئے ہیں۔

مزید :

قومی -