آصف زرداری کی ہسپتال میں ملاقات‘ آپ نہیں ہوتے تو کوئی نہیں پوچھتا: ڈاکٹر عاصم ”لالو کھیتی“ کہنے پر تفتیشی افسر سے تلخ کلامی

آصف زرداری کی ہسپتال میں ملاقات‘ آپ نہیں ہوتے تو کوئی نہیں پوچھتا: ڈاکٹر ...
آصف زرداری کی ہسپتال میں ملاقات‘ آپ نہیں ہوتے تو کوئی نہیں پوچھتا: ڈاکٹر عاصم ”لالو کھیتی“ کہنے پر تفتیشی افسر سے تلخ کلامی

  

کراچی (ویب ڈیسک) سابق صدر آصف علی زرداری نے جناح ہسپتال میں زیرعلاج ڈاکٹر عاصم سے ملاقات کی۔آصف زرداری نے ڈاکٹر عاصم کی خیریت دریافت کی۔ ڈاکٹر عاصم حسین نے آصف علی زرداری سے ملاقات میں گلے شکوے بھی کئے۔ ڈاکٹر عاصم نے کہا آپ نہیں ہوتے تو کوئی نہیں پوچھتا۔ ایک کے بعد ایک بیماری کا شکار ہو رہا ہوں۔ گردے کی بھی تکلیف ہے۔ آپ کے پیچھے کوئی رہنما ملنے نہیں آتا۔

ورلڈ ٹریڈ سینٹرپر حملے کے الزام میں گرفتارمصری معلم شیخ عمر عبدالرحمان امریکی جیل میں انتقال کرگئے

آصف علی زرداری نے کہا کہ آپ ہمت نہ ہاریں‘ اللہ بہتر کرے گا۔ دریں اثنا کراچی کی احتساب عدالت میں جے جے وی ایل ریفرنس کی سماعت کے بعد ڈاکٹر عاصم صحافیوں کے سامنے پھٹ پڑے۔ انہوں نے ریفرنس میں لگائے گئے تمام الزامات پڑھ کر سناتے ہوئے کہا تفتیشی افسر مجھے لالو کھیتی ہونے کا طعنہ دیتا ہے۔ تفتیشی افسر سے میری تلخ کلامی ہوئی ہے، اگر تفتیشی افسر طعنہ دے گا تو انصاف کون دے گا۔ ڈاکٹر عاصم نے صحافیوں سے غیررسمی گفتگو میں کہا میرے ساتھ ناانصافی ہو رہی ہے۔ میں نے اپنے دور میں ملک کو 380 ملین ڈالر کا منافع دیا‘ لیکن تمام منصوبوں کو ختم کرکے مجھے جیل میں قید کر دیا گیا اور آج قطر سے گیس منگوائی جارہی ہے کیونکہ قطر سے گیس منگوانے سے مال بنتا ہے۔ میڈیا مجھے وقت دے میں ایک خاص چیز سامنے لاﺅں گا۔ مجھے جتنا انصاف مل رہا ہے وہ صرف عدلیہ کی وجہ سے مل رہا ہے۔ جب تک عدالتیں کام کر رہی ہیں‘ پاکستان جنگ نہیں ہار سکتا۔ میں اپنا مقدمہ لڑ رہا ہوں اور میں لوگوں کیلئے مثال بن کر سامنے آﺅں گا۔ پیپلزپارٹی اور کراچی والوں کا جیل میں ہونا ایک روایت ہے۔ انصاف کیلئے لڑ رہا ہوں جس کیلئے مجھے میڈیا کا تعاون چاہئے۔

دوسری جانب پیپلزپارٹی کے رہنما تاج حیدر نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ سندھ میں اتنی گیس ہے کہ ملک کو مفت فراہم کی جا سکتی ہے۔ باہر سے گیس منگوانے کیلئے ڈاکٹر عاصم کے منصوبوں کو ختم کرکے پیغام دیا گیا۔ جو بھی قدرتی وسائل استعمال کرے گا‘ اس کا حال ڈاکٹر عاصم جیسا ہوگا۔

مزید :

کراچی -