میتوں اور لواحقین کیلئے طورخم بارڈر پر نرمی، افغانستان جانے کی اجازت

میتوں اور لواحقین کیلئے طورخم بارڈر پر نرمی، افغانستان جانے کی اجازت
میتوں اور لواحقین کیلئے طورخم بارڈر پر نرمی، افغانستان جانے کی اجازت

  

خیبر ایجنسی (ویب ڈیسک) پاک افغان بارڈر بند ہونے کی وجہ سے پشاور اور لنڈی کوتل میں زیادہ لوگ پھنس گئے، ہسپتالوں سے ڈسچارج مریض بھی افغانستان جانے کی انتظار میں ہیں تاہم خیر سگالی کے تحت سکیورٹی فورسز نے پاکستان میں جاں بحق ہونےو الوں کے لواحقین اور میتوں کو افغانستان جانے کی اجازت دے دی۔

پاکستان اور افغانستان کے درمیان کشیدگی میں اضافہ باعث تشویش ہے :ترجمان نیٹو مشن

تفصیلات کے مطابق پاک افغان بارڈر طورخم بند ہونے کی وجہ سے تجارتی سرگرمیاں بری طرح متاثر ہوگئی ہیں اور کسٹم کی مد میں سات ملین کا نقصان ہورہا ہے جبکہ لوکل ٹرانسپورٹ سمیت افغانستان کو سپلائی کرنے والی ٹرالرز اور دوسرے بڑی گاڑیاں بھی کھڑی ہوگئی ہیں اور طورخم میں ہوٹلز اور دوسری مارکٰٹ سمیت کسٹم کلیئرنس ایجنٹس کے دفاتر اور کام بھی بند ہوگئے ہیں۔ بارڈر بندش سے پشاور اور لنڈی کوتل سمیت جلال میں بھی ہزاروں لوگ جانے کے انتظار میں بیٹھے ہیں، زیادہ تر مریض پشاور میں ہسپتالوں سے ڈسچارج ہوگئے ہیں جو اب ٹرانسپورٹ اڈوں اور ہوٹلوں میں جانے کے انتظار میں ہیں۔

واضح رہے کہ سکیورٹی فورسز نے خیر سگالی کے تحت پاکستان میں جاں بحق ہونے والوں کی میتوں اور ان کے لواحقین کو افغانستان جانے کی اجازت دے دی گئی ہے اور دو دنوں میں تقریباً 11 میتیں افغانستان لے گئے ہیں۔

مزید :

خیبر -