برطانیہ کی یورپ سے علیحدگی کے بعد اس ملک کی چاندی ہوگئی،بیرونی سرمایہ کاری کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے

برطانیہ کی یورپ سے علیحدگی کے بعد اس ملک کی چاندی ہوگئی،بیرونی سرمایہ کاری ...
برطانیہ کی یورپ سے علیحدگی کے بعد اس ملک کی چاندی ہوگئی،بیرونی سرمایہ کاری کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے

  



دی ہیگ(ڈیلی پاکستان آن لائن)برطانیہ اور یورپ کے درمیان علیحدگی کا قانونی عمل مکمل ہوچکاہے۔یورپی سرمایہ کاروں نے اپنا کاروبار لندن سے منتقل کرنا شروع کردیا ہے ۔برطانیہ اور یورپ کی علیحدگی سے سب سے زیادہ فائدہ ہالینڈ کو ہوتا دکھائی دے رہاہے جہاں یورپی اور دیگر غیر ملکی سرمایہ کاربیرونی سرمایہ کار ڈیرے ڈالنے لگے ہیں۔

برطانوی خبررساں ادارے رائٹرز کے مطابق ڈچ حکومت کا کہنا ہے کہ بریگزٹ قریب آرہا تھا اس لئے2019سے ہی بڑی بڑی کمپنیوں نے اپنے دفاتر نیدرلینڈزاور بینی لیکس ممالک کو منتقل کرنا شروع کردیئے تھے۔

نیدرلینڈز کی غیر ملکی سرمایہ کاری کی ایجنسی این ایف آئی اے کا کہنا ہے کہ گزشتہ برس 78نمایاں کاروبار یہاں منتقل ہوئے ہیں۔این ایف آئی اے کے مطابق دوہزار سولہ کے بریگزٹ ریفرنڈم سے اب تک ہر سال نئی رجسٹرڈ ہونے والی کمپنیوں کی تعداد پہلے سے دگنی ہورہی ہے۔اور اس وقت مزید 425کمپنیاں نیدرلینڈ منتقل ہونے کا ارادہ رکھتی ہیں۔ایجنسی کے مطابق نئی آنے والی ایک سو چالیس کمپنیاں مزید 4ہزار200ملازمتیں پیدا کریں گی جبکہ نیدرلینڈزکو بیرون ملک سرمایہ کاری کی مد میں مزیدچارسوملین دستیاب ہوں گے۔

واضح رہے کہ برطا نیہ رواں سال جنوری میں یورپین یونین سے علیحدہ ہوچکا ہے اور اب اکتیس دسمبر 2020تک ٹرانزیشن پیریڈچل رہا ہے اس دوران تمام معاملات کو خوش اسلوبی سے نبھایا جائے گا۔

مزید : بین الاقوامی /برطانیہ