طورخم باڈر پر متعلقہ ادارے بزنس کمیونٹی کے ساتھ تعاون کریں،غلام علی 

 طورخم باڈر پر متعلقہ ادارے بزنس کمیونٹی کے ساتھ تعاون کریں،غلام علی 

  

پشاور(سٹی رپورٹر)سارک چیمبرآف کامرس کے نائب صدر حاجی غلام علی نے کہاہے کہ ایکسپورٹ بڑھانے کے لئے طورخم باڈر پر متعلقہ ادارے بزنس کمیونٹی کے ساتھ تعاون کرے تاکہ زیادہ دے زیادہ ایکسپورٹ ہوکرملک کو قیمتی زرمبادلہ مل سکے،برادر ملک افغانستان کو ایکسپورٹ ہونے والے اشیائے خوردونوش کے لئے پلانٹ پروٹیکشن سرٹیفیکیٹ کا اجرائپشاور کے بجائے بزنس کمیونٹی کی آسانی کے لئے طورخم باڈر پرکی جائے تاکہ فوڈآئٹم، پولٹری ودیگر اشیائخراب ہونے سے بچ سکے۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے طورخم باڈ سے،منسلک ایکسپورٹر امپورٹرپر مشتمل وفد حاجی ابلان علی کی سرابراہی میں ملاقات میں کہی۔ سارک چیمبرکے رکن ملک افغانستان اور پاکستان کے درمیان ایکسپورٹ امپورٹ کے مشکلات پر تفصیلی غور ہوا۔ مختلف شعبہ جات کے تجارت سے وابسطہ اور چیمبرز کے ایگزیکٹیوممبران نے طور خم باڈر پر اپنے اپنے مشکلات سے سارک چیمبرکے نائب صدر کو آگاہ کیا، یہ بھی کہاگیاکہ ان مشکلات کی وجہ سے پاک افغان ایکسپورٹ میں کمی آرہی ہے۔حاجی غلام علی نے کہاکہ بحیثیت فیڈریشن آف پاکستان کے سابقہ صدر اور سارک چیمبرکے نائب صدر کی حیثیت سے طورخم باڈر پر مشکلات کے خاتمے، ایکسپورٹ میں آسانی اور خاص کرپلانٹ پروٹیکشن سرٹیفکیٹ آفس طورخم میں نہ ہونے اورپشاورمیں واقع ہونے کی وجہ سے نہ صرف بزنس کمیونٹی کوگاڑیوں کے کیرج میں اضافی اخراجات برداشت کرتے ہے بلکہ فوڈ ائٹم ودیگر اشیائے خوردونوش خراب ہوتے ہے،پلانٹ پروٹیکشن آفس ہفتہ، اتوار کے روز بند ہونے کی وجہ سے ایکسپورٹ میں مشکلات درپیش ہیں۔ اس موقع پر سارک چیمبر کے نائب صدر حاجی غلام علی نے طورخم باڈرکے بزنس کمیونٹی اور چیمبرزممبران کو یقین دلایاکہ چیمبرز، ایسوسی ایشنز،فیڈریشن آ ف پاکستان چیمبرز اور ہم سب کی ذمہ داری بنتی ہے کہ ہم خیبرپختونخوا اور خاص کرطورخم باڈر کے بزنس کمیونٹی کے مشکلات کا خاتمہ کرے اور اس میں آسانی پیدا کرے، موجودہ حکومت کی بھی خواہش ہے کہ ملک کی ترقی اور خوشحالی کے لئے ایکسپورٹ میں اضافہ ہوں اور ایکسپور ٹ میں آنے والے مشکلات کا خاتمہ ہوں۔انہوں نے وفد کو یقین دلایا کہ آپ کے مشکلا ت سارک چیمبرز، فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز کے پلیٹ فارم سے جلد حکام بالا کو، متعلقہ محکموں کو پہنچاکر ختم کرنے کی کوشش کرینگے۔ انہوں نے وفد کو یقین دلایا کہ پلانٹ پروٹیکشن ڈیپارنمنٹ سے بھی بات کی جائے گی اور اس ادارے کے سربراہ کا بھی فرض بنتاہے کہ وہ بزنس چینل آسانی سے رن کرنے کے لئے آفس کو طورخم باڈر شفٹ کرے۔ سارک چیمبر کے نائب صدر نے وفد کو یقین دلایاکہ بحیثیت پاکستانی بزنس مین ہم سب کو کوشش کرنا چاہئے کہ ملک کے ایکسپورٹ میں اضافہ ہو تاکہ قیمتی زرمبادلہ پاکستان آسکے، اس کے لئے تمام متعلقہ ادارے بزنس کمیونٹی سے تعاون اور ان کی سرپرستی کرے، متعلقہ ادارے سارک چیمبراور فیڈریشن آف پاکستان چیمبرزکے پلیٹ فارم سے آگاہ کرینگے کہ متعلقہ اداروں کو سارک چیمبرز ایکسپورٹ بڑھانے میں مثبت رول ادا کرسکے۔ وفد ابلان علی اینڈکمپنی اینڈ کسٹم کلیئرنگ ایجنٹ،ساعر انٹرپرائز کے چیف ایگزیکٹیو قاری نظیم گل، ابراہیم شنواری انٹرپرائزکے چیف ایگزیکٹیو ابراہیم خان شنواری اور اسماعیل شنواری پاک لینڈ گلوبل انٹرپرائز کے چیف ایگزیکٹیو اسماعیل خان شنواری سمیت دیگرممبران پر وفد مشتمل تھا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -