پشاور،کوہستان کے باشندوں کا مطالبات کے حل کیلئے دھرنا جاری

پشاور،کوہستان کے باشندوں کا مطالبات کے حل کیلئے دھرنا جاری

  

پشاور(سٹی رپورٹر) کلوچ قوم متحدہ کولئی کمیٹی کوہستان کے عمائدین کا اپنے مطالبات  کے حق میں صوبائی اسمبلی پشاور کے سامنے احتجاجی ھرنا کئی روز سے جاری ہے اور مطالبہ کر رہے ہے کہ  بٹیڑہ ہیڈ کوارٹر کو بحال کیا جائے جبکہ نیاء جاری ہونیوالا نوٹفیکیشن میں کلوچ قوم کو اعتماد میں نہیں لیا گیا اسی لئے کلوچ قوم کولئی پاس نیو نوتفیکیشن کے مطابق جوسیر غازی آباد کو تسلیم نہیں کرتی مظاہرے کی قیادت قاضی سیف اللہ اور دیگر ساتھیوں کر رہے ہیں اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ سابق وزیر اعلیٰ پرویز خٹک نے ایک بار بٹیڑہ کو ضلع کولئی پالس کا ہیڈ کوارٹرکلیئر کر دیا تھا  اور نو ماہ تک بٹیڑہ ضلع کولئی پاس کا ہیڈ کوارٹر رہا تاہم اب مبینہ طور  پر ممبر صوبائی اسمبلی مفتی عبدالرحمن کے مداخلت پر اس حوالے سے نیاء اعلامیہ جاری کیا گیا جسمیں جو سیر غازی آباد کو ہیڈ کوارٹر بنایا گیا ہے  جبکہ کلو چ قوم کو اعتماد میں نہیں لیا گیا  جو سراسر زیادتی اور نا انصافی ہے انہوں نے کہا کہ جو سیر غازی آباد کو ہیڈ کوارٹر بنانے کا نیاء اعلامیہ مسترد کرتے ہے انہوں نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بٹیڑہ ہیڈ کوارٹر کو بحال کیا جائے کیونکہ مذکورہ جگہ دونوں اقوام کیلئے تیسری جگہ کی حثیت کا حامل ہے بصورت دیگر احتجاج پر مجبور ہونگے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -