خیبر پختونخوا حکومت، کنیواکاشت کو سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل کرنے کا عندیہ 

خیبر پختونخوا حکومت، کنیواکاشت کو سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل کرنے کا ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا حکومت نے کینوا(Quinoa) کی کاشت کو سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل کرنے کا عندیہ ظاہر کیا ہے۔خیبر پختونخوا بورڈ آف انویسٹمنٹ او ر تجارت کی ایک پریس ریلیز کے مطابق کینوااپروٹین دینے والی ایک اہم فصل ہے جو دنیا بھر میں کیش کراپ سمجھی جاتی ہے اور صحت کیلئے بھی مفید ہے۔کینوا کی پیداوار سے ملک میں عام فصلوں کی نسبت 15گنا زیادہ قیمتی زر مبادلہ کمانے کا موقع ملے گا۔کے پی بورڈ آف انویسٹمنٹ میں جی سی سی کے فوکل پرسن نواز محمود کا کہنا ہے کہ خیبر پختونخوا حکومت ایسی فصلوں کی کاشت پر زور دی رہی ہے جو ملک کیلئے قیمتی زر مبادلہ کما سکیں۔ زیتون کی کاشت سے لیکرشہد بانی اور دوسرے زرعی پراجیکٹس وزیراعظم عمران خان، خیبر پختونخوا حکومت اور گورنر شاہ فرمان کی خصوصی توجہ کا مرکز ہے۔اس پراجیکٹ پر پہلی دفعہ بات چیت، خیبر پختونخوا بورڈ آف انویسٹمنٹ اور تجارت کے ایک وفد نے کی۔جس میں وائس چیئر مین فیصل رحیم رحمان، چیف منسٹر خیبر پختونخوا کے سابق مشیر نجی اللہ خٹک، فوکل پرسن جی سی سی نواز محمود نے یو اے ای سنٹر فار بائیسولین ایگریکلچر کے ڈائریکٹرجنرل ڈاکٹر عشمانی ایلوفی اور منسٹرفوڈ اینڈ سیکورٹی مریم بنت محمد سعید سے 2018ء میں ملاقات کے دوران کی گئی۔اس ملاقات کے بعد خیبر پختونخوا اور آئی سی بی اے کے درمیان ایک معاہدہ ہوا جس کے بعد وفدکینوا کاشت کیلئے مردان بائی سولین مرکز کا دورہ کرے گا۔وفد نے آئی سی بی اے کے سیائنسدانوں کے ساتھ اسی سال دورہ کیا اور سیکرٹری زراعت محمد اسرار خان، فیصل سلیم، نواز محمود او ر نجی اللہ کے ہمراہ مردان کا دورہ کیا اور بلین ٹری سونامی پراجیکٹ کا جائزہ بھی لیا۔وفد کی سیکرٹری فارسٹ نظر حسین شاہ کے بعد سی ای او  خیبر پختونخوا بورڈ آف انویسٹمنٹ اور ڈائریکٹر جنرل آئی سی بی اے کے درمیان ایک یاداشت پر دستخط کئے گئے جس میں خیبر پختونخوا میں موسمیاتی تبدیلیوں کے حوالے سے زرعی اور ماحولیاتی پراجیکٹس پر خیبر پختونخوا  میں کام کرنے پر اتفاق ہوا۔اس معاہدہ کے تحت خیبر پختونخو ا میں خشک سالی بائیوسلائن ایگرو پراجیکٹ اور نمکیات کا مقابلہ کرنے والی گھاس اور جڑی بوٹیوں اور درختوں کی کاشت کے حوالے سے مختلف تکنیک پر کام کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔گولڈ کراپ کینوہ پراجیکٹ کو سالانہ ترقیاتی پراگرام میں شامل کرنے سے صوبے میں صحت مند فصلوں کے فروغ کے ساتھ ساتھ اس کی کاشت سے 15گنا زیادہ منافع بھی زرمبادلہ کے طور پربھی کما یا جاسکتا ہے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -