گیلا  نی منظور، پرویز رشید نا منظور، پنجاب سے خواتین اور ٹیکنو کریٹس کی دو، دو سیٹوں پرامید وار بلا مقابلہ کامیاب ہو گئے: الیکشن کمیشن 

 گیلا  نی منظور، پرویز رشید نا منظور، پنجاب سے خواتین اور ٹیکنو کریٹس کی دو، ...

  

 کراچی لاہور، کوئٹہ، اسلام آباد(جنرل رپورٹر،سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ دیسک، نیوز ایجنسیاں) الیکشن کمیشن نے یوسف رضا گیلانی کے کاغذات نامزدگی پر تحریک انصاف کے اعتراضات مسترد کرتے ہوئے  سا بق وزیر اعظم کو سینیٹ انتخاب کیلئے اہل قرار دیدیا۔ ریٹرنگ آفیسر نے سابق وزیراعظم کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے۔ریٹرننگ آفیسر نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد یوسف رضا گیلانی کے کاغذات نا مز دگی پر تحریک انصاف کے اعتراضات مسترد کرتے ہوئے انہیں سینیٹ الیکشن لڑنے کے لئے اہل قرار دیدیا۔ فیصلے میں کہا گیا ہے یوسف رضا گیلانی کی 5سالہ نااہلی ختم ہوچکی جبکہ ان کے مقدمات عدالتوں میں زیر التوا ہیں، زیرالتوا مقدمات پر کسی کو الیکشن لڑنے سے نہیں روکا جا سکتا۔جبکہ ا لیکشن کمیشن نے سینیٹ انتخابات کیلئے پرویز رشید کے کاغذات نامزدگی مسترد کر دئیے۔ لیگی رہنما کے کاغذات نامزدگی پر تحریک انصاف نے اعتراض دائر کیا تھا پرویز رشید پر 6 اعتراضات داخل ہوئے جن میں سے پانچ اعتراضات رد کر دئیے گئے تھے۔پرویز رشید پر پنجاب ہاؤس اسلام آباد کے نادہندہ ہونے کا الزام ہے،پنجاب سے سینیٹ کی ٹیکنوکریٹ کی 2 نشستوں اور خواتین کی 2 نشستوں پر امیدوار بلامقابلہ منتخب ہوگئے۔الیکشن کمشنر پنجاب کے مطابق ٹیکنوکریٹس کی نشست پر حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے علی ظفر اور ن لیگ کے اعظم نذیر تارڑ کامیاب قرار پائے۔الیکشن کمشنر پنجاب کے مطابق ٹینکو کریٹ کی نشست پر پی ٹی آئی امیدوارعطااللہ خان نے کاغذات نامزدگی واپس لے لیے۔اس کے علاوہ پنجاب سے سینیٹ کی خواتین کی 2 نشستوں پر  بھی امیدوار بلامقابلہ منتخب ہوئیں۔الیکشن کمشنر پنجاب کے مطابق پی ٹی آئی کی ڈاکٹر ذرقا اور ن لیگ کی سعدیہ عباسی کامیاب قرار پائیں۔الیکشن کمشنر پنجاب کے مطابق سعدیہ عباسی کی کوورنگ امیدوار سائرہ تارڑ کاغذات کی جانچ  پڑتال کیلئے نہیں آئیں جس پر سعدیہ عباس کامیاب قرار پائیں۔لیکشن کمیشن نے سینیٹرمشاہداللہ خان کی وفات کے بعد ان کے بیٹے افنان اللہ خان کے کاغذات نامزدگی منظور کرلیے ہیں، افنان اللہ خان جنرل نشست پر سینیٹ الیکشن میں حصہ لیں گے، افنان اللہ خان اپنے والد مشاہداللہ خان کے کورنگ امیدوار تھیکراچی میں الیکشن کمیشن نے سینیٹ الیکشن کے لیے تحریک انصاف کے رہنما فیصل واوڈا کے کاغذات نامزدگی منظور کرلیے۔پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور وفاقی وزیر فیصل واوڈا سینیٹ الیکشن کے لیے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے سلسلے میں کراچی میں الیکشن کمیشن سندھ کے دفتر میں پیش ہوئے۔فیصل واوڈا کی الیکشن کمیشن کے دفتر آمد کے موقع پر پی ٹی آئی کارکنان بھی موجود تھے اور پیپلز پارٹی کے کارکنان بھی وہاں تھے جس کی وجہ سے الیکشن کمیشن آفس کے باہر کشیدگی پید اہوئی۔دونوں جماعتوں کے کارکنان نے ایک دوسرے کے خلاف نعرے بازی کی تاہم اس دوران امن و امان کی صورتحال برقرا رکھنے کے لیے پولیس کی نفری بھی موجود رہی۔سینیٹ انتخابات کے لیے پنجاب سے 11 نشستوں کیلئے 20 امیدواروں کے کاغذات منظور،2 امیدواروں پرویز رشید اور نیلم ارشاد کے کاغذات نامزدگی مسترد جبکہ تین نے کاغذات نامزدگی واپس لے لئے،ڈاکٹرروبینہ کاغذات کی جانچ پڑتال کیلئے الیکشن کمیشن میں پیش نہ ہوئیں۔(ق) لیگ کے کامل علی آغااورپیپلز پارٹی کے عظیم الحق منہاس، پی ٹی آئی کے جمشیداقبال چیمہ، ڈاکٹرز رقا سہروری، محمدمدنی، عمرسرفراز چیمہ، بیرسٹرعلی ظفر، سیف اللہ نیازی، اعجازچوہدری، ظہیر عباس کھوکھر، اعجاز منہاس اور عون عباس کے کاغذات نامزدگی منظور ہوئے۔(ن) لیگ کے زاہدحامد، اعظم نذیرتارڑ، سیف الملوک کھوکھر، عرفان صدیقی، بلیغ الرحمان، سائرہ افضل تارڑ، ساجدمیر، افنان اللہ خان اورسعدیہ عباسی کے کاغذات نامزدگی منظور کر لئے گئے۔ الیکشن کمیشن خیبرپختونخوا نے سینیٹ امیدواروں کی جانچ پڑتال کاعمل مکمل کرلیاہے صوبے کی12نشستوں پر انتخابات میں حصہ لینے والے کل51 میں سے11کے کاغذات نامزدگی مستردکردئیے گئے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے بعد کل تک ان کے خلاف اپیلیں دائرکی جاسکتی ہیں 22اور23فروری کو ان کاغذات نامزدگی سے متعلق ٹریبونل اپیلوں کو نمٹائے گی24فروری کو نظرثانی شدہ لسٹ آویزاں کی جائیں گی 25فروری کو کوئی بھی امیدوارکاغذات نامزدگی واپس لے سکتاہے قبل ازیں سات جنرل نشستوں پر22،دوٹیکنوکریٹ کی نشستوں پر11، خواتین کی دونشستوں کیلئے13اوراقلیت کی واحدنشست کیلئے پانچ کاغذات نامزدگی جمع کرائے گئے تھے۔صوبائی الیکشن کمیشن کی فہرست کے مطابق جمعرات کے روز ٹیکنوکریٹ کی نشست کیلئے جن امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مستردقرارپائے ہیں ان میں زبیر علی،نصراللہ خان،ریحان عالم خان اور حامد الحق شامل ہیں جنرل نشست پرسجاد حسین،اورنگزیب اورنجب گل کے کاغذات بھی مستردکردئیے گئے ہیں اس کے علاوہ خواتین نشستوں کیلئے زرین ریاض،صائمہ خالد،حمیدہ شاہد اورعصمت آراکاکاخیل کے کاغذات نامزدگی نامنظورکئے گئے ہیں۔سندھ سے سینیٹ امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کا مرحلہ بھی مکمل ہوگیا۔ ریٹرننگ افسر نے 11 نشستوں پر تینوں کیٹگریز کے 35 نامزدگی فارم منظور کرلیے گئے، 4 مسترد کردیے گئے، مجموعی طور پر الیکشن کمیشن نے 39 کاغذات نامزدگی وصول کیے تھے،، ایم کیو ایم کے رؤف صدیقی کے کاغذات 16 سال کی تعلیم نہ ہونے جبکہ سید عسکر زیدی کے نامزدگی فارم اچیومنٹ نہ ہونے پر مسترد کردیے گئے جبکہ پی ٹی آئی کی عمومی نشست پر کاغذات جمع کرانے والی زنیرہ ملک ریٹرننگ افسر کے سامنے پیش نہیں ہوئیں، ٹی ایل پی کے یشااللہ خان کے کاغذات بھی مسترد ہوگئے۔  پیپلز پارٹی کے مجموعی طور پر سینیٹ کے 13 امیدواروں کے 14 کاغذات نامزدگی منظور ہوگئے، کاغذات کی جانچ پڑتال کے پہلے روز (17 فروری) الیکشن کمیشن نے 12 امیدواروں کے 13 نامزدگی فارم منظور کیے تھے جبکہ جمعرات (18 فروری) کو ٹیکنو کریٹ پر فاروق ایچ نائیک کے کاغذات درست قرار دیے گئے۔ اس طرح سینیٹ کی عمومی نشست پر پیپلز پارٹی کے منظور شدہ امیدواروں میں صادق علی میمن، سلیم مانڈوی والا، شیری رحمان، دوست علی جیسر، جام مہتاب حسین، تاج حیدر اور  شہادت اعوان شامل ہیں جبکہ پلوشہ زئی خان، رخسانہ پروین، خیرالنسا اور فرزانہ بلوچ کے کاغذات نامزدگی خواتین کی مخصوص نشست پر منظور ہوئے ہیں۔ ٹیکنو کریٹ کے لیے فاروق ایچ نائیک، شہادت اعوان اور  کریم احمد خواجہ کے کاغذات درست قرار پائے ہیں۔ تحریک انصاف کے 12 امیدواروں میں سے 11 کے نامزدگی درست قرار دیدی گئی۔ جنرل نشست پر پی ٹی آئی کے امیدوار فیصل واڈا، اشرف قریشی، محمود مولوی اور علی جونیجو کے کاغذات منظور ہوگئے جبکہ ٹیکنو کریٹ پر حسن بخشی، حنید لاکھانی، سیف اللہ ابڑو اور ثمر علی خان کے نامزدگی فارم درست قرار پائے۔ خواتین کی نشست پر فضا ذیشان،  سرینہ عدنان اور ارم بٹ کے کاغذات منظور کرلیے گئے۔ جنرل سیٹ پر پی ٹی آئی کی امیدوار زنیرہ ملک ریٹرننگ افسر کے سامنے پیش نہیں ہوئیں، ان کے تائید و تجویز کنندہ نے الیکشن کمیشن کو ان کے کاغذات مسترد کرنے کے لیے خط لکھا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے زنیرہ ملک کی تجویز یا تائید نہیں کی ہے۔ گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس (جی ڈی اے) کے جنرل سیٹ پر پیر صدرالدین شاہ اور سردار رحیم کے کاغذات درست قرار دیے گئے۔ ایم کیو ایم پاکستان کے 10 میں سے 8 امیدواروں کے نامزدگی فارم منظور کرلیے گئے۔ایم کیو ایم کے عمومی نشستوں کے امیدوار عامر خان، فیصل سبزواری، عبدالقادر خانزادہ اور ظفر کمالی کے کاغذات نامزدگی منظور کرلیے گئے۔ٹیکنو کریٹ پر ڈاکٹر شہاب امام جبکہ خواتین کی مخصوص نشست پر خالدہ اطیب اور سبین غوری کے کاغذات درست قرار دیے گئے ہیں۔ ریٹرننگ افسر نے رؤف صدیقی کے کاغذات 16 سال کی تعلیم نہ ہونے اور سید عسکر زیدی کے کاغذات اچیومنٹ نہ ہونے پر مسترد کردیے۔ اسی طرح ٹیکنو کریٹ پر تحریک لبیک کے امیدوار یشا اللہ خان کے کاغذات بھی مسترد ہوگئے۔

سینیٹ الیکشن

مزید :

صفحہ اول -