2013ءمیں چین کی معاشی ترقی کی شرح سب سے کم رہی

2013ءمیں چین کی معاشی ترقی کی شرح سب سے کم رہی

بیجنگ (اے پی پی) گزشتہ ایک دہائی کی نسبت سے سال2013ءمیں چینی معیشت کی ترقی کی شرح سب سے کم رہی ہے۔ اے ایف پی کے سروے کے نتائج کے مطابق دنیا کی دوسری بڑی معیشت کو مقامی قرضوں،شیڈو بینکنگ اور غیر روایتی قرضوں کے مسائل کا سامنا ہے۔ اقتصادی سروے کے دوران عالمی معیشت پر نظر رکھنے والے چودہ ماہرین اقتصادیات نے کہا کہ سال2013ءمیں چین کی مجموعی قومی پیداوار(جی ڈی پی) کی شرح ترقی 7.7 فیصد رہی جو سال2012ءسے بڑھ نہیں سکی۔ انہوں نے بتایا کہ چینی معیشت نے سال2013ءکے دوران اقتصادی شرح نمو میں گزشتہ سال کی نسبت سے ترقی حاصل نہیں کی جو 1999ءسے لے کر اب تک چین کی سب سے کم سالانہ شرح ترقی ہے۔ انہوں نے کہا کہ چینی حکام نے2013ءکے دوران جی ڈی پی کی شرح ترقی کے حوالے سے دعویٰ کئے تھے۔

 جن کو پورا نہیں کیا جا سکا۔ ہانگ کانگ سے تعلق رکھنے والے سوسائٹی جنرل اکانوسٹ یاﺅوی نے کہا ہے کہ چینی حکومت کو شیڈو بینکنگ اور مقامی حکومتوں کی جانب سے گاڑیوں کی خریداری پر دیئے جانے والے قرضوں کے حوالے سے مزید نئیہ پالیسیز مرتب کرنا ہوں گی جن کی مدد سے وہ ملکی معیشت کی شرح ترقی میں حائل رکاوٹوںکو ختم کر سکتی ہے۔

مزید : کامرس