منشیات سمگلنگ کا الزام،بھارت نے کنٹرول لائن پر 49 ٹرکوں کو روک لیا

منشیات سمگلنگ کا الزام،بھارت نے کنٹرول لائن پر 49 ٹرکوں کو روک لیا

مظفر آباد/ہٹیاں بالا (اے این این) سرینگر مظفرآباد دوطرفہ تجارت کے ذریعے آزادکشمیر سے مقبوضہ کشمیر جانے والے مال بردار ٹرک سے 1 ارب سے زائد مالیت کی برا¶ن شوگر(اعلیٰ معیار کی ہیروئن) پکڑنے کے بھارتی الزام کے بعد کنٹرول لائن پر تجارت کا معاملہ سنگین صورتحال اختیار کرگیا‘ بھارتی انتظامیہ کی جانب سے ٹرک اور اس کا ڈرائیور آزادکشمیرا کی انتظامیہ کے حوالے نہ کرنے کی وجہ سے جمعہ کے روز آزادکشمیر سے مقبوضہ کشمیر جانے والے 49 ٹرکوں کو مقبوضہ کشمیر اور مقبوضہ کشمیر سے آنے والے ٹرکوں کو آزادکشمیر میں روک دیا گیا‘ ٹریول اینڈ ٹریڈ اتھارتی آزادکشمیر نے مذکورہ تاجر کوپولیس حراست میں رکھوایا جس پر بھارت کی جانب سے ایک ارب سے زائد مالیت کی برا¶ن شوگر بھیجنے کا الزام ہے۔جمعہ کے روز دوطرفہ تجارت کے ذریعے 49 مال بردار ٹرک مقبوضہ کشمیر گئے بھارتی انتظامیہ کے مطابق الفجر کمپنی کے نام سے مقبوضہ کشمیر جانے والا ٹرک نمبر آر آئی ایس 2137 جس پر کاٹھا بادام لوڈ تھا اس میں سے 114 پیکٹ برا¶ن شوگر کے برآمد ہوئے جن کی مالیت ایک ارب سے زائد بنتی ہے۔ مقبوضہ کشمیر کی انتظامیہ نے مذکورہ ٹرک کے ڈرائیور محمد شفیق ولد عبدالعزیز ساکنہ سراڑ مظفرآباد کو حراست میں لینے کے علاوہ ٹرک کو ضبط کرلیا۔ جمعہ اور ہفتہ کی رات تقریباً ساڑھے بارہ بجے دونوں اطراف کے حکام کے درمیان امن برج پر میٹنگ ہوئی جس میں بھارتی انتظامیہ نے بتایا کہ جس ٹرک سے برا¶ن شوگر برآمد ہوئی اسے ضبط کرلیاگیا ہے اور ٹرک ڈرائیور کو حراست میں رکھا ہے۔ باقی 48 ٹرک واپس بھیجے جا رہے ہیں لیکن متنازعہ ٹرک اور ڈرائیور کو آزادکشمیر کے حوالے نہیں کیاجائے گا ۔ڈائریکٹر جنرل ٹریول اینڈ ٹریڈ اتھارٹی آزادکشمیر بریگیڈئر (ر) محمد اسماعیل نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ برا¶ن شوگر پکڑنے کا الزام بھارت کی جانب سے دوطرفہ تجارت کو بند کرنے کی سازش ہے اس سے قبل بھی بھارت نے دوطرفہ تجارت کے ذریعے مقبوضہ کشمیر جانے والے ٹرکوں سے منشیات پکڑنے کا الزام لگایا لیکن ابھی تک ہمیں کوئی ثبوت فراہم نہئں کئے۔ اس طرح کے ہتھکنڈے استعمال کرکے دوطرفہ تجارت کو بند کرنا چاہتا ہے۔

ٹرک ضبط

مزید : صفحہ آخر