اب کسی بھی موبائل فون کی بیٹری پھٹے گی نہیں، ماہرین نے بالآخر حل ڈھونڈ نکالا

اب کسی بھی موبائل فون کی بیٹری پھٹے گی نہیں، ماہرین نے بالآخر حل ڈھونڈ نکالا
اب کسی بھی موبائل فون کی بیٹری پھٹے گی نہیں، ماہرین نے بالآخر حل ڈھونڈ نکالا

  

سان فرانسسکو(نیوزڈیسک) گذشتہ کچھ عرصے سے موبائل کی بیٹریاں پھٹنے والی خبریں گرم ہیں اور سام سنگ کمپنی تو اپنے موبائل پھٹنے کی وجہ سے مشکلات میں پھنسی ہوئی ہے لیکن اب سٹین فورڈ یونیورسٹی کے تحقیق کاروں نے ایسی بیٹری بنالی ہے جس میں ایسا میٹیریل استعمال کیاگیا ہے جس میں آگ لگنے کی صورت میں آگ بجھ جائے گی۔

سام سنگ گلیکسی نوٹ 7 اچانک کیوں پھٹ جاتا تھا؟ بالآخر تحقیقات مکمل ہوگئیں، انتہائی حیران کن اصل وجہ سامنے آگئی

تفصیلات کے مطابق تحقیق کاروں نے اس بیٹری میںTriphenyl Phosphateکا استعمال کیا ہے جو بیٹری کے آگ پکڑنے والے میٹیریل میں آگ لگنے کی صورت میں اسے بجھادے گا۔موبائل، لیپ ٹاپ اور دیگر گجٹس میں استعمال ہونے والی لیتھیم بیٹریوں میں دو الیکٹروڈز (ایک منفی اور ایک مثبت)لگائے جاتے ہیں اور ان میں مائع ہوتا ہے جو کہ چارج ہونے والے ذرات کو منفی اور مثبت الیکٹروڈز کے درمیان چلاتا ہے۔ اگر بیٹری کو پنکچر، اوور چارج یا شارٹ کیا جائے تو اس میں حرارت پیدا ہونے سے آگ لگ سکتی ہے،اگر یہ درجہ حرارت150ڈگری پر پہنچ جائے تو بیٹری میں آگ لگ جاتی ہے۔تاہم نئی ٹیکنالوجی میں جب درجہ حرارت 150ڈگری پر پہنچے گا تو ایک فائبر کا کوٹ جو کہ میٹیریل کے گرد چڑھایا گیا ایسے کیمیکل خارج کرے گا کہ آگ خودبخود بجھ جائے گی۔تجربات میں تحقیق کاروں نے دیکھا کہ یہ میٹیریل بیٹری کے آگ پکڑنے والے اجزاءکے ساتھ 0.4سیکنڈ میں مل کر آگ لگنے سے روکتا ہے۔

حال ہی میں سام سنگ کے فونز کی بیٹری میں آگ کی وجہ سے موبائل پھٹنے کے واقعات سامنے آچکے ہیں جس کے بعد کمپنی کو دنیا میں کافی مشکلات کا سامناکرنا پڑا تھا لیکن اس نئی ٹیکنالوجی کی وجہ سے مستقبل میں اس طرح کے واقعات سے چھٹکارا پایا جاسکے گا۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی