2016ء کے دوران عالمی اقتصادی شرح نمو صرف 2.2فیصد رہی :اقوام متحدہ

2016ء کے دوران عالمی اقتصادی شرح نمو صرف 2.2فیصد رہی :اقوام متحدہ

اقوام متحدہ(اے پی پی) اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ عالمی معیشت سست شرح نمو کے دور سے ابھی تک باہر نہیں نکل سکی جو عالمی ادارے کے 2030 ء تک دنیا کو انتہائی غربت سے نکالنے کے ایجنڈے کیلئے خطرہ ہے۔عالمی ادارے کی ’’ اقتصادی صورتحال اور مقاصد ‘‘ کے حوالے سے جاری ہونے والی حالیہ رپورٹ کے مطابق 2016ء کے دوران عالمی اقتصادی شرح نمو صرف 2.2 فیصد رہی جو 2009 ء کی اقتصادی بدحالی کے بعد اس کی کم ترین سطح ہے ، اندازہ ہے کہ 2017 ء میں عالمی اقتصادی شرح نمو 2.7 فیصد اور 2018ء میں 2.9 فیصد رہے گی۔دنیا میں اس وقت 48 کم ترقی یافتہ ممالک ہیں جن میں سے اکثریت کا تعلق براعظم افریقا سے ہے، وہاں 2017ء میں 5.2 فیصد اور 2018ء میں 5.5 فیصد اقتصادی شرح نمو کی توقع ہے جو عالمی ادارے کے غربت کے خاتمے کیلئے 7 فیصد اقتصادی شرح نمو کے حدف سے کم ہے۔ان ملکوں میں عالمی آبادی کا 35 فیصد حصہ رہائش پذیر ہیں جو 7 فیصد اقتصادی شرح نمو کے حدف کے حصول تک غربت کے مسائل کا شکار رہیں گے۔ان ملکوں میں غربت کے خاتمے کیلئے 2030 ء تک سرمایہ کاری میں سالانہ 11 فیصد اضافے کی ضرورت ہے۔

مزید : کامرس