سیمنٹ اداروں کی پیداواری استعداد421 ملین ٹن تک بڑھ جائیگی

سیمنٹ اداروں کی پیداواری استعداد421 ملین ٹن تک بڑھ جائیگی

اسلام آباد (اے پی پی) رواں سال2017ء کے اختتام تک سیمنٹ تیار کرنے والے اداروں کی پیداواری استعداد421 ملین ٹن تک بڑھا دی جائے گی۔ اس وقت سیمینٹ ساز ملکی اداروں کی پیداواری استعداد395 ملین ٹن سالانہ ہے۔ آل پاکستان سیمنٹ مینوفیکچررز ایسوسی ایشن( اے پی سی ایم اے ) کی رپورٹ کے مطابق پاکستان نے سال 2002ء میں سیمنٹ کی برآمدات شروع کی تھیں اور پاکستان سے سیمنٹ درآمد کرنے والے بڑے ممالک میں افغانستان، جنوبی افریقہ اور بھارت شامل تھے۔ رپورٹ کے مطابق سال 2002ء کے دوران سیمنٹ کی ملکی برآمدات مجموعی پیداوار کے ایک فیصد کے قریب رہی ہیں جبکہ صرف 7سال کے قلیل عرصہ کے دوران سال 2009ء کے سیمنٹ کی برآمدات سیمنٹ کی مجموعی قومی فروخت کے 35 فیصد تک بڑھ گئیں۔ اے پی سی ایم اے کی رپورٹ کے مطابق گذشتہ دو سال کے دوران سیمنٹ کی قومی برآمدات میں کمی کا رجحان رہا ہے اور سال 2015ء کے دوران سیمنٹ کی مجموعی فروخت کا 20 فیصد حصہ برآمد کیا گیا جبکہ سال 2016ء میں برآمدات کا حصہ15فیصد تک کم ہوگیا۔ رپورٹ کے مطابق پاکستان سے سیمنٹ درآمد کرنے والے ممالک میں عراق، قطر اور متحدہ عرب امارات بھی شامل تھے تاہم ان ممالک میں سیمنٹ کی مقامی پیداوار میں اضافہ کے باعث سیمنٹ کی قومی برآمدات میں کمی واقع ہوئی ہے۔ برآمدات میں کمی کے باوجود سیمنٹ ساز مقامی اداروں کی پیداواری استعداد میں مسلسل اضافہ کا رجحان ہے اور رواں سال کے اختتام تک پیداواری استعداد کو395ملین ٹن سے 421 ملین ٹن تک بڑھایا جائے گا ۔

جس کی بنیادی وجہ ملک میں بنیادی ڈھانچے کے بڑے منصوبوں اورچین پاکستان اقتصادی راہداری سمیت ہاؤسنگ کے شعبے میں نئے منصوبوں کا آغاز ہے۔

مزید : کامرس