آئندہ سال سے 80سے 90فیصد پاکستان لوڈشیڈنگ فری ہوگا :محمد یونس ڈھاگا

آئندہ سال سے 80سے 90فیصد پاکستان لوڈشیڈنگ فری ہوگا :محمد یونس ڈھاگا

ملتان(اے پی پی )وفاقی سیکرٹری پانی وبجلی محمدیونس ڈھاگانے کہاکہ آئندہ سال سے 80سے 90فیصدپاکستان لوڈشیڈنگ فری ہوگاتاہم جن علاقوں میں ریکوری کے مسائل ہوں گے وہاں لوڈشیڈنگ کے مسائل بھی رہیں گے۔ایوان تجارت وصنعت ملتان میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ پہلے بارہ سے چودہ گھنٹے انڈسٹری کے لئے لوڈشیڈنگ تھی جواب زیروہوچکی ہے،ہم نے اپنے موجودہ پلانٹس کی صلاحیت بڑھاکراوران کی اصلاح کرکے بجلی پیداوارمیں تقریباََ28فیصداضافہ کیاہے۔ابھی بڑے پلانٹس کی پیدوارنیشنل گرڈ میں آناباقی ہے اسی طرح دونیوکلیئر پلانٹس سے بھی بجلی کاحصول شروع ہونے والاہے ۔انہوں نے کہاکہ پہلے زیادہ اوربغیرشیڈول لوڈشیڈنگ کی بڑی وجہ ’’کیش فلو‘‘کی کمی اوراس کی وجہ سے پاورہاؤسسز میں تیل کی سپلائی کا’’کٹ آف‘‘ہو ناتھااب ہرپاورہاؤس میں وافرتیل موجودہے ،سرکاری پلانٹس نے جوبار ہ ارب یونٹ سالانہ پیدواردے رہے تھے، اب ان سے چوبیس ارب یونٹس پیدوارحاصل کررہے ہیں ۔گدوپاورہاؤس کی پیدوار 500میگاواٹ رہ گئی تھی وہ اب بڑھ کرسولہ سوسومیگاواٹ ہوچکی ہے۔وفاقی سیکرٹری نے کہاکہ بجلی پیداوار کے لئے ہماری سابقہ پالیسیاں صحیح نہیں تھیں۔ان پالیسیوں کی وجہ سے مہنگے برآمدی تیل کے پلانتس لگائے گئے ،ہم اپنی پیدوار ی صلاحیت کا40فیصد اسی مہنگے درآمدی تیل سے بجلی پیداکررہے تھے جوعوام اورخزانے پربڑابوجھ تھا۔موجودہ حکومت نے اب اس پالیسی کوتبدیل کرکے بجلی پلانٹس کوکول اورگیس پرشفٹ کررہی ہے ۔اس کے علاوہ پلانٹس کی فرسودہ مشینری جوایک بڑامسئلہ تھی کو بھی آہستہ آہستہ ’’ریٹائر‘‘کررہے ہیں ۔تھرمیں چارکول پلانٹس لگارہے ہیں جن میں سے ہرایک کی پیداواری صلاحیت 1320میگاواٹ ہے ،یہ 2020ء میں مکمل ہوں گے ان سے کم قیمت بجلی ملے گی ۔ملک میں بجلی سستی ہورہی ہے اورآئندہ ہم ’’سرپلس ‘‘کی طرف چلے جائیں گے ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ ہم نیپراسے بات کریں گے کہ اگرانڈسٹری یاتجارتی صارفیق پری پیڈمیٹرلگوالیں جس کی وہ ایڈوانس پے منٹ کریں توان کوٹیرف میں رعایت بھی دی جائے۔انہوں نے میپکو کے اعلیٰ افسران کوہدایت کی کہ وہ ہرماہ ایوان تجارت وصنعت ملتان میںآکرممبران سے ایک میٹنگ کیاکریں۔

تاکہ تاجروں اورصنعت کاروں کے مسائل سے آگاہی اوران کے تدارک کے عملی اقدامات فوری اٹھائیں جاسکیں۔قبل ازیں ایوان تجارت وصنعت ملتان کے صدر خواجہ جلال الدین رومی نے اپنے خطاب میں کہاکہ موجودہ حکومت کی پالیسیوں کی بدولت توانائی بحران میں بہت کمی ہوگئی ہے۔زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ اورچائنہ پاکستان اکنامک کوریڈورجیسے پروجیکٹس سے ملک ترقی کی جانب گامزن ہے۔انہوں نے کہاکہ تسلسل سے چلنے والی صنعتوں کولوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ قراردیاجائے ،زرعی اورایس ایم ای سیکٹرکودن میں ایک دفعہ مسلسل بجلی دی جائے ،کیپیٹوپاورکے لئے ترجیحی طورپرگیس دی جائے ۔سی این جی کی قیمت پٹرول سے کم کم اوربوائیلر کے لئے گیس استعمال کرنے پراس کی قیمت لکٹری سے بھی کم رکھی جائے ۔ٹیکسٹائل سیکٹرکے لئے سپیشل ٹیرف متعارف کرایاجائے ۔

مزید : کامرس