استنبول نائٹ کلب پرحملے کا ملزم ایران اورپاکستان میں قیام پذیر رہا

استنبول نائٹ کلب پرحملے کا ملزم ایران اورپاکستان میں قیام پذیر رہا

انقرہ(این این آئی)ترک میڈیا نے کہاہے کہ استنبول کے نائٹ کلب پر حملہ کرنیوالے ملزم نے ترکی آنے سے قبل کئی دوسرے ملکوں میں قیام کیا جہاں اس نے عسکری تربیت حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ مختلف دیگر سرگرمیوں میں بھی حصہ لیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق عبدالقادر مشربوف افغانستان میں دو سال تک رہا جہاں اس نے عسکری تربیت حاصل کی۔ اس نے کچھ عرصہ پاکستان میں بھی گذارا، پاکستان کے بعد وہ ایران داخل ہوا جہاں ایرانی پولیس نے اسے گرفتار کیا اور سخت ترین حراست میں رکھنے کے باوجود وہ ایران سے فرار میں کامیاب ہوگیا۔ترک آمد کے بعد 16 دسمبر کو وہ قونیہ سے استنبول روانہ ہوا۔ یکم جنوری کی رات اس نے استنبول کے رینا ہوٹل میں ایک نائیٹ کلب میں تقریب پر فائرنگ کرکے چالیس کے قریب افراد کو ہلاک کیا اور غائب ہوگیا۔ ترک پولیس اس کی مسلسل تلاش اور تعاقب میں مصروف رہی اور بالآخر 16 جنوری کو استنبول میں بشیکطاش کالونی سے حراست میں لے لیا گیا۔

مزید : عالمی منظر