صوبہ بھرمیں ایمرجنسی پیشنٹ ریفرل سسٹم کے اجراپرغور

صوبہ بھرمیں ایمرجنسی پیشنٹ ریفرل سسٹم کے اجراپرغور

لاہور(کرائم رپورٹر)ڈی جی ایمرجنسی سروسز پنجاب ڈاکٹر رضوان نصیر نے گزشتہ روز ریسکیو 1122ہیڈ کوارٹرز میں تمام ضلعی ایمرجنسی افسران کے ساتھ ایمرجنسی پیشنٹ ریفرل سسٹم کے مجموعی میکانزم پر تفصیلی بات چیت کی۔محکمہ صحت پنجاب کی ایمبولینسز کو بروئے کار لاتے ہوئے ایمرجنسی متاثرین کو ایک ادارے سے دوسرے ادارے میں منتقل کرنے اور پنجاب میں ایمرجنسی کیئر کے نظام کو بہترکرنے کیلئے ایمرجنسی پیشنٹ ریفرل سسٹم کے میکانزم کے اجراء کیلئے میٹنگ منعقد ہوئی۔غیر ایمرجنسی متاثرین اور ڈیڈ باڈیز کی منتقلی کیلئے نجی اور غیر سرکاری ایمبولینسز کے استعمال کے معاملات بھی زیرِ غور آئے۔ میٹنگ میں موٹر بائیک ایمبولینس سروس کے نئے پروجیکٹ کی پرپیش رفت پر بات چیت ہوئی ، ایک موثر ریفرل سسٹم کی عدم موجودگی میں ایمرجنسی متاثرین کو پیش آنے والی مشکلات زیرِ بحث آئیں جبکہ پنجاب بھر کی باقی ماندہ 62تحصیلوں میں ایمرجنسی سروسز کے اجراء کے معاملات پر بھی غور کیا گیا۔حالیہ ایمرجنسی پیشنٹ ریفرل سسٹم کے بارے میں ضلعی ایمرجنسی آفیسران کو بریفنگ دی گئی اور انہیں بتایا گیا کہ پنجاب بھر میں کل 930ایمبولینسز میں سے 599ایمبولینسز کی نشاندہی کی گئی ہے جو ایمرجنسی متاثرین ریفرل سسٹم کیلئے استعمال کے قابل پائی گئی ہیں۔ ڈی جی ایمرجنسی سروسز پنجاب ڈاکٹر رضوان نصیر نے کہا کہ حافظ آباد ضلع کے ماڈل کو اپناتے ہوئے دیگر اضلاع میں اس سسٹم کا آغازیکم فروری سے کیا جارہا ہے۔ میٹنگ میں تمام ضلعی ایمرجنسی افسران نے شرکت کی۔

، ریسکیو 1122ہیڈ کوارٹرز کے افسران، اکیڈمی ، ڈپٹی ڈائریکٹر ہیومن ریسورس ڈاکٹر فواد شہزاد مرزا، رجسٹرار اکیڈمی ڈاکٹر محمد فرحان خالد، پراونشل مانیٹرنگ آفیسر میاں رفعت ضیاء اور دیگر سینئر ریسکیو افسران نے شرکت کی۔

مزید : علاقائی