’’یہ خاکی اپنی فطرت میں نوری ہے نہ ناری ہے‘‘

’’یہ خاکی اپنی فطرت میں نوری ہے نہ ناری ہے‘‘

لاہور(سٹی رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے پنجاب کے دورے پر آئی بلوچستان سے تعلق رکھنے والی طالبات کے وفد سے گفتگو کے دوران بھائی چارے ، ایثار ،اخوت، اتحاد ، اتفاق اور یکجہتی کا پیغام دیتے ہوئے کہا کہ ہم سب کو پاکستان کیلئے سوچنا چاہیے اور وطن عزیز کی ترقی و خوشحالی کیلئے دن رات محنت کے ساتھ کام کرنا چاہیے ۔ اگر روٹی ایک ہے تو سب بھائیوں کو تھوڑی تھوڑی مل کر کھانی چاہیے ۔ اگر آج کوئٹہ ، پشاور اور کراچی میں میٹرو ماس ٹرانزٹ کے منصوبے سی پیک میں شامل کئے گئے ہیں تو ہمیں اس کی بہت خوشی ہے کیونکہ پاکستان کی چاروں اکائیاں ترقی کریں گی تو ہی پاکستان کی گاڑی سپیڈ کے ساتھ آگے بڑھے گی اور اپنی منزل مقصود پر پہنچے گی۔وزیراعلی نے ایک موقع پر کہا کہ جب میں کمسن تھا تو کراچی جانا ہوتا تھا اور اس وقت کراچی میں ٹرام چلتی تھی جو کہ شاندار ٹرانسپورٹ تھی۔وزیر اعلی نے طالبات کے سوالات کے جواب دیئے اور کہا کہ پاکستان کو آگے لیجانے کیلئے صرف ایک ہی راستہ ہے اور وہ خدمت ، محنت ، دیانت اور امانت کا ہے ۔ اس موقع پر انہوں نے یہ شعر پڑھا۔

’’عمل سے زندگی بنتی ہے جنت بھی جہنم بھی ۔۔۔یہ خاکی اپنی فطرت میں نوری ہے نہ ناری ہے‘‘

وزیر اعلی نے بلوچستان کی طالبات اور اساتذہ کے وفد کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ ہماری مہمان نہیں بلکہ آپ اپنے ہی گھر آئی ہیں اور مجھے قوم کی عظیم بیٹیوں اور بہنوں سے ملکر بے حد خوشی ہوئی ہے ۔ تقریر کے دوران اذان عصر کے احترام میں وزیر اعلی شہباز شریف نے اپنی تقریر روک دی۔وزیر اعلی نے طالبات کو لیپ ٹاپ دیئے اور ان سے شفقت کا اظہار بھی کیا۔

مزید : صفحہ اول