انتہا پسندی کے اندرونی، بیرونی عوامل بارے جامعہ زکریا میں کانفرنس ختم

انتہا پسندی کے اندرونی، بیرونی عوامل بارے جامعہ زکریا میں کانفرنس ختم

ملتان (سٹاف رپورٹر )بہاء الدین زکریایونیورسٹی ملتان کے شعبہ سیاسیات کے زیراہتمام دو روزہ انٹرنیشنل کانفرنس بعنوان’’ دہشت گردی ، انتہا پسندی اور عسکریت پسندی کے اندرونی و بیرونی عوامل ‘‘ اختتام پذیر ہوگئی . کانفرنس کے دوسرے روز بھی بڑی تعداد میں سکالرز نے تحقیقی مقالہ جات پیش کیے . کانفرنس میں گزشتہ روز تین سیشن ہوئے جن میں مختلف سکالرز نے اپنے اپنے مقالہ جات پیش کیے.کانفرنس کی (بقیہ نمبر3صفحہ12پر )

اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بہاء الدین زکریایونیورسٹی ملتان کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر طاہر امین نے اس پر اطمینان کا اظہار کیا کہ ملکی اور بین الاقوامی شرکاء کی شمولیت نے مکالمے کی ایک ایسی فضا پیدا کی جس سے اس شعبہ کے طالب علم ہی نہیں بلکہ رائے عامہ کے دیگر شعبے بھی مستفیذ ہونگے .انہوں نے کہاکہ کانفرنس کے سارے پیپر ویل ریسرچر تھے . انہوں نے کہا جو بات آپ کے زہن میں ہے وہ زیادہ Effective ثابت ہوگی کسی بھی سکالر کو اپنا نقطہ نظر استدلال کے ساتھ جامع انداز میں سامعین تک پہنچانا چاہیے .انہوں نے کانفرنس کو ایک اہم تعلیمی کوشش قرار دیتے ہوئے کہاکہ ایسی کانفرنسیں نہ صرف پاکستان کے مسائل کے حل میں اپنا اہم کردار ادا کریں گی بلکہ ان کی مدد سے لوگوں کو شعور اور آگہی بھی حاصل ہوگی ڈاکٹر طاہر حجازی سابقہ ممبر پلاننگ کمیشن آف پاکستان، ڈاکٹر ارم خالد، ڈاکٹر محمد مشتاق، چیئرمین شعبہ سیاسیات یونیورسٹی آف گجرات، ڈاکٹر شفیع گیلانی ڈاکٹر مقرب اکبر چیئرمین شعبہ سیاسیات بہاء الدین زکریایونیورسٹی و فوکل پرسن کانفرنس نے کانفرنس کی سفارشات پیش کیں اور خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان میں دہشت گردی اور عسکریت پسندی کے خاتمہ کے لیے ٹھوس اقدامات کرنے ہوں گے جن میں سے سب سے اہم غربت اور جہالت کا خاتمہ ہیں انہوں نے اپنے خطاب میں اس بات پر زور دیا کہ جمہوریت اور جمہوری اداروں کی بقاء بھی اسی میں ہے کہ عوام کو غربت اور جہالت سے نکال کر ان کو دنیا کے بدلتے ہوئے جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کیاجائے . ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں بامقصد تعلیم اور تحقیق کو فروغ دینا چاہیے تاکہ معاشرتی مسائل کا حل ممکن ہوسکے . کانفرنس کی اختتامی تقریب کے آخر میں وائس چانسلر ڈاکٹر طاہر امین نے مقالہ جات پیش کرنے والے سکالرز کو اسناد بھی دیں .

مزید : ملتان صفحہ آخر