سردی ‘چھٹیاں اورچٹکلے

سردی ‘چھٹیاں اورچٹکلے
سردی ‘چھٹیاں اورچٹکلے

  

حیرت کی بات ہے کہ جب سردی شروع ہوتی ہے تو بچوں کی اسکول کی چھٹیاں ختم ہوچکی ہوتی ہیں۔۔۔۔۔ایسی صورتحال صرف پاکستان میں ہی ہوسکتی ہے ذرا سوچئیے!!کہ جس مقصد کیلئے چھٹیاں دی جائیں وہ ’’سیزن‘‘ہی بعد میں آتا ہے اور سردی میں ٹھٹھرتے‘کانپتے بچے موسم ’’ٹھنڈا‘‘ہونے سے پہلے ہی اپنی چھٹیاں پوری کرچکے ہوتے ہیں۔۔۔۔۔اس تشویشناک صورتحال کے ذمہ دار محکمہ تعلیم‘پرائیویٹ اسکولوں کی مختلف تنظیمیں اور والدین ہیں۔۔۔۔۔جو کمسن بچوں کیلئے چھٹیوں کی ’’پلاننگ‘‘نہیں کرسکتے ،وہ ان کے روشن مستقبل کی کیا ضمانت دیں گے؟کراچی میں سردی بڑھتے ہی ’’موسم سرما کی تعطیلات‘‘پر بحث شروع ہوچکی ہے لیکن جب تک کوئی نتیجہ نکلے گا سردیاں ختم ہوچکی ہوں گی اور معاملہ پھر اگلے سال تک ’’لٹک‘‘جائے گا۔۔۔۔۔اوریہ مصرعہ یادآئے گا

مرض بڑھتا گیا جوں جوں دوا کی

مجھے تو لگتا ہے ہم سب اور ہمارے پلانرز پاگل پن میں مبتلا ہے ۔وہ زندگی کو یونہی چٹکلوں میں اڑا رہے ،بہکا رہے ہیں ۔ اس ہفتے کے سوشل میڈیا پر جو پاگل پن ہوا آپ بھی ملاحظہ فرمائیں۔

*ہماری سیاست وہ ابلتا گٹر ہے جس کا ڈھکن چوری ہو گیا ہے اور اس کی صفائی کو آنے والے بھی اس کے اندر گرتے جارہے ہیں

*پھوپھو اس خاتون کا نام ہے جو شوہر کیسامنے مسماۃ حمیدہ خاتون اور بھائی کے گھر پھولن دیوی بن کر رہتی ہے

*پر اسرار طریقوں سے بندے غائب ہوتے دیکھ کر فرشتوں اور جنات پر ایمان مزید پختہ ہو گیا ہے

*ایک خوبصورت دعا:

یااللہ تیرے اٹھانے سے پہلے کوئی اور نہ اٹھائے۔۔۔ آمین

*مکمل تحریک انصاف۔۔

جہانگر ترین : جہاز

شیریں مزاری : ٹریکٹر ٹرالی

مراد سعید : سائیکل

نعیم بخاری : اسٹپنی

*حکومت سے درخواست ہے کہ ایک ایسا اسپتال بنایا جائے جہاں زنانہ اکاو نٹ بنانے والے لڑکوں کاعلاج کرکے ان میں ماں بننے کی امید بھی جگائی جائے

*خاموشی آپکو ملک کا صدر بنا سکتی ہے ،یہی وجہ ہے آج تک کوئی خاتون پاکستان کی صدر نہیں بنی اور نا ہی بن سکے گی

*بیوی کو بھی سوچنا چاہیے جو بندہ اس کے کہنے پر سگریٹ چھوڑ سکتا ہے وہ کسی اور کے کہنے پر بیگم کو بھی چھوڑ سکتا ہے

*شادی شدہ مرد کی زندگی میں سب سے زیادہ پرسکون لمحات وہ ہوتے ہیں جب ا س کی بیوی کسی تقریب میں جانے کیلئے نہایت یکسوئی سے میک اپ میں مصروف ہوتی ہے

*افسوس اس بات کا ہے کہ39اسلامی ممالک نے کبھی معاشی و تجارتی اتحاد نہیں کیا

*ہم قائد کے فرمان کام کام اور کام پر اس قدر فریفتہ ہیں کہ پورے جی جان سے ایسا کام تلاش کرتے ہیں جس میں کوئی کام نہ کرنا پڑے

*آسٹریلیا کے ساتھ سیریز میں تمام شعبہ جات میں کھلاڑی چاروں شانے اسی طرح چت ہوئے جس طرح رن مرید مرد حضرات بیوی کے سامنے ہوتے ہیں

*ہمیں تو اب پتہ چلا کہ منہ کالا کرنے کو ’’وائٹ واش‘‘کہتے ہیں۔

مزاحیہ نسخے

سوکنوں کے بیچ دشمنی تو آپ نے اکثر سنی ہو گی، بلکہ ہمارے معاشرے میں سوکنوں کے درمیان چپقلش تسلیم شدہ حقییت کے طور پر مانا جاتا ہے، جیسے سوکنیں ایک دوسرے کی دوست نہیں ہو سکتیں۔اگر آپ بھی ایسا ہی سمجھتے ہیں اور چار شادیاں کرنے کا پروگرام بنا رہے ہیں تو تنبہیہ کی خاطر ملائیشا کے راسلن ناگاہ کی کہانی سے عبرت حاصل کریں۔ خبر کے مطابق کوالالمپور کے رہائشی راسلن ناگاہ کی دونوں بیگمات میں اس قدر دوستی پروان چڑھی کہ دونوں نے مل کر راسلن سے طلاق کا مطالبہ کر دیا۔راسلن اس سبق کے بعد بھی تیسری شادی کے لئے پر تول رہے ہیں۔ اب اسے آپ کیا کہیں گے؟

۔

نوٹ: روزنامہ پاکستان میں شائع ہونے والے بلاگز لکھاری کا ذاتی نقطہ نظر ہیں۔ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں۔

مزید : بلاگ