طالبہ سے ہوٹل میں زیادتی کا مرکزی ملزم ثناءاللہ ملک سے فرار ،ہائی کورٹ میں ایس پی انوسٹی گیشن کا انکشاف

طالبہ سے ہوٹل میں زیادتی کا مرکزی ملزم ثناءاللہ ملک سے فرار ،ہائی کورٹ میں ...
طالبہ سے ہوٹل میں زیادتی کا مرکزی ملزم ثناءاللہ ملک سے فرار ،ہائی کورٹ میں ایس پی انوسٹی گیشن کا انکشاف

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس شاہد حمید ڈار نے آٹھویں جماعت کی 14سالہ طالبہ کے ساتھ اجتماعی بداخلاقی کے ملزم کی ضمانت کی منسوخی کے لئے دائر اپیل میں ملزم عدنان ثناءاللہ کا ٹرائل عدالت سے ریکارڈ طلب کرتے ہوئے مزید سماعت27جنوری تک ملتو ی کر دی ہے۔

گزشتہ روز ایس پی انوسٹی گیشن کی طرف سے عدالت کو آگاہ کیا گیا کہ مرکزی ملزم عدنان ثناءاللہ بیرون ملک فرار ہو چکا ہے، عدالت کو بتایا کہ ملزم عدنان دبئی فرار ہو چکا ہے جس کی وجہ سے اسے گرفتار نہیں کیاجا سکا۔ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل پنجاب عبدالصمد نے عدالت کو بتایا کہ اجتماعی زیادتی کی شکار طالبہ سے بداخلاقی کے الزام میں 8ملزمان کے خلاف تھانہ ریس کورس میں مقدمہ درج ہے،ملزمان نے مدعی مقدمہ سے راضی نامے کی بنیاد پر ٹرائل عدالت سے ضمانت کرا رکھی ہے ،عدالت ملزمان کی ضمانت مسترد کرئے۔انہوں نے عدالت کو آگاہ کیا کہ عدالت سے ضمانت منظور ہونے کے بعد ملزم کے بیرون ملک فرار سے ثابت ہوتا ہے کہ ملزم نے ضمانت کا غلط استعمال کیا اور عدالتی فیصلے کو اپنے فرار کے لئے ڈھال بنایا ،عدالت ملزم کی ضمانت مسترد کرئے۔جس پر عدالت نے اجتماعی بداخلاقی کے ملزم کی ضمانت کی منسوخی کے لئے دائر اپیل میں عدنان ثنائ اللہ کا ٹرائل کورٹ سے ریکارڈ طلب کرتے ہوئے سماعت 27جنوری تک ملتوی کر دی ہے۔

مزید : لاہور