زرعی ادویات کے تیسری مرتبہ لیبارٹری ٹیسٹ کا کیا جواز ہے ؟ ہائی کورٹ نے حکومت سے جواب مانگ لیا

زرعی ادویات کے تیسری مرتبہ لیبارٹری ٹیسٹ کا کیا جواز ہے ؟ ہائی کورٹ نے حکومت ...
زرعی ادویات کے تیسری مرتبہ لیبارٹری ٹیسٹ کا کیا جواز ہے ؟ ہائی کورٹ نے حکومت سے جواب مانگ لیا

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس عاطر محمود نے پالیسی نہ ہونے کے باوجود زرعی ادویات کا تیسری مرتبہ لیبارٹری ٹیسٹ کرانے کے فیصلے کے خلاف درخواست پر سیکرٹری زراعت سے 15 فروری تک جواب طلب کر لیاہے۔

درخواست گزار سرفراز حسین سمیت 9سرکاری ریسرچ آفیسرز کی درخواست ان کے وکلاءنے موقف اختیار کیا کہ سیکرٹری زراعت نے پنجاب کی لیبارٹری سے زرعی ادویات کے تیسری مرتبہ ٹیسٹوں کا نوٹیفکیشن جاری کیا ہے حالانکہ زرعی ادویات کے پہلے ہی دو مرتبہ وفاق کی لیبارٹری سے ٹیسٹ کرائے جاتے ہیں اور تیسری مرتبہ ٹیسٹ تک ادویات کے نمونوں کی اصلیت برقرار نہیں رہتی،درخواست گزاروں کا مزید کہنا تھا کہ پنجاب کی لیبارٹری سے تیسری مرتبہ ادویات کے ٹیسٹ کیلئے کوئی پالیسی نہیں بنائی گئی جبکہ زرعی ادویات کے تیسری مرتبہ ٹیسٹ سے ریسرچ کا کام بھی متاثر ہو گا، لہذا عدالت پنجاب کی لیبارٹری سے تیسری مرتبہ ٹیسٹ کرانے کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دے۔

مزید : لاہور