ٹائینو سیرپ سے 21افراد کی ہلاکتوں کے کیس کے مرکزی ملزم کے انتقال کے باعث مقدمہ کی کارروائی روک دی گئی

ٹائینو سیرپ سے 21افراد کی ہلاکتوں کے کیس کے مرکزی ملزم کے انتقال کے باعث مقدمہ ...
ٹائینو سیرپ سے 21افراد کی ہلاکتوں کے کیس کے مرکزی ملزم کے انتقال کے باعث مقدمہ کی کارروائی روک دی گئی

  

لاہور(نامہ نگار)ایڈیشنل سیشن جج فیصل میر نے شاہدرہ ٹاون میں ٹائینوسیرپ پینے سے ہلاک ہونے والے 21افراد کے کیس کی سماعت مرکزی ملزم خالد سلیم کے انتقال پر روک دی ،فاضل جج نے آئندہ سماعت پر ملزم کا ڈیتھ سرٹیفکیٹ استغاثے کو پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

ایڈیشنل سیشن جج فیصل میر کی عدالت میں تھانہ شاہدرہ ٹاﺅن پولیس نے ٹائنوسیرپ جعلی پینے سے 21افراد کی ہلاکت کیس میں ملوث خالد سلیم، رضوان احمد اور فداحسین وغیرہ کے خلاف چالان پیش کررکھا ہے ،ملزمان پر الزام تھا کہ انہوں نے جعلی سیرپ فروخت کیا تھا جس کی وجہ سے 21افراد ہلاک ہوگئے تھے۔عدالت میں چالان آنے پر اس کیس کی باقاعدہ سماعت کی جا رہی ہے ،گزشتہ روزدوران سماعت عدالت میں وکیل صفائی نے بتایا کہ کیس کا مرکزی ملزم خالد سلیم قضا الہی سے انتقال کرگیا ہے جس پرعدالت نے سماعت روکتے ہوئے ڈپٹی پراسکیوٹر ملک امجدعلی کو ہدایت کی کہ وہ ملزم کا ڈیتھ سرٹیفکیٹ آئندہ سماعت پرعدالت میں پیش کریں،فاضل جج نے ہدایت کی کہ عدالت مرکزی ملزم کی وفات کی تصدیق کے بعد کیس سماعت کے لئے اگلی تاریخ سے جاری رکھے گی۔

مزید : لاہور