صوبائی دارالحکومت ،بداخلاقی کی شکار 205 حوا کی بیٹیاں انصاف کی منتظر

صوبائی دارالحکومت ،بداخلاقی کی شکار 205 حوا کی بیٹیاں انصاف کی منتظر

  

لاہور(نامہ نگار)صوبائی دارالحکومت میں بداخلاقی کا شکار 205 حوا کی بیٹیاں تاحا ل انصاف کی منتظر،جنسی تشدد کا نشانہ بننے والی متاثرہ خواتین عدالتوں کی ٹھوکریں کھانے پر مجبورہیں ۔تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت میں خواتین کے ساتھ بداخلاقی اور جنسی تشدد کے واقعات میں روز بروز اصافہ ہونے لگا ہے۔سیشن عدالت میں خواتین کے ساتھ جنسی بداخلاقی کے205 مقدمات زیر سماعت ہیں،یادر رہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے خواتین کے ساتھ بداخلاقی اور تشدد کے بڑھتے ہوئے واقعات کے پیش نظرمقدمات کی جلدسماعت کے لئے پنجاب کی پہلی صنفی تشدد کورٹ کا افتتاح کیا۔اس عدالت میں 100 کے قریب مقدمات التوا ء کا شکار ہیں،جنسی تشدد کی خصوصی عدالت نے 35کیسز میں فرد جرم عائد کر رکھی ہے۔سیشن عدالت میں گزشتہ ایک سال کے دوران خواتین سے بداخلاقی اور تشدد کرنے والے ایک بھی ملزم کو سزا نہیں ہوئی ہے۔سیشن کورٹ میں زیر سماعت مشہور مقدمات میں مسلم لیگی راہنما عدنان ثناء اللہ کی لڑکی سے بداخلاقی کا کیس بھی التوا ء کا شکار ہے جبکہ پنجاب یونیورسٹی میں قانون کی طالبہ سے بداخلاقی کرنے والے ملزم کا کیس بھی زیر سماعت ہے ،قانونی ماہرین مدثر چودھری،مرزا حسیب اسامہ اورمجتبی چودھری کا کہنا ہے کہ جنسی تشدد کے کیسزکا جلد فیصلہ نہ ہونے کی بڑی وجہ پولیس کی جانب سے مقدمات میں ناقص تفتیش اور چالان بروقت عدالتوں میں پیش نہ کرنا ہے ۔

مزید :

علاقائی -