پارلیمنٹ کے لیے ’’لعنت ‘‘ کا لفظ بہت ہلکا ہے اسمبلی میرے خلاف 100قرار دادیں پاس کر لے : عمران خان

پارلیمنٹ کے لیے ’’لعنت ‘‘ کا لفظ بہت ہلکا ہے اسمبلی میرے خلاف 100قرار دادیں ...

  

اسلام آباد مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں ) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے خواجہ آصف اور نواز شریف کو 'اسمبلی کی تباہی کا ذمہ دار' قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پارلیمنٹ کے لعنت کا لفظ بہت ہلکا ہے۔ا اپنی رہائشگاہ پر پریس کانفرنس کے دوران پارلیمنٹ کے حوالے سے دیئے گئے اپنے حالیہ بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ 'لعنت کا لفظ میں نے بہت ہلکا استعمال کیا، جو لفظ کہنا چاہتا تھا، وہ اس سے زیادہ سخت تھا۔'عمران خان کا کہنا تھا کہ 'پارلیمنٹ ایک عمارت کا نام ہے، جس کی عزت کو پارلیمنٹیرینز اپنی حرکتوں سے اوپر یا نیچے لے جاتے ہیں'۔پی ٹی آئی چیئرمین نے تنقید کرتے ہوئے کہا کہ 'پارلیمنٹ میں چوروں کا مافیا بیٹھ گیا ہے، میں کیسے ایسی پارلیمنٹ کی عزت کروں جہاں مجرم بیٹھے ہوئے ہیں، یہ کیسی پارلیمنٹ ہے جس میں وزیراعظم نے کھڑے ہو کر جھوٹ بولا '۔ان کا کہنا تھا'آج وزیر خارجہ خواجہ آصف نے قومی اسمبلی میں بڑی دھواں دھار تقریر کی، دراصل خواجہ آصف اور نواز شریف جیسے لوگوں نے ہی اسمبلی تباہ کی ہے'۔عمران خان نے مزید کہا کہ 'ملک کا وزیر خارجہ دبئی میں ایک کمپنی میں کام کر رہا ہے، جس کی 16 لاکھ روپے تنخواہ ہے اور ان کے بینک اکاؤنٹس سے امریکا پیسے جارہے ہیں جو ان کی بیوی کو ملتے ہیں'۔عمران خان نے سابق وزیراعظم نواز شریف کا حوالہ دیتے ہوئے سوال کیا، 'مجھے یہ بتائیں کہ کون سی ایسی اسمبلی ہے جو ایک 300 ارب چوری کرنے والے شخص کے لیے قانون بناکر اسے پارٹی کا سربراہ بناتی ہے'۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ 1992 کے بعد شریف خاندان کی دولت میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے، ساتھ ہی انہوں نے شریف برادران پر پنجاب پولیس کے اہلکاروں سے منی لانڈرنگ کروانے کا الزام بھی عائد کردیا۔عمران خان نے سابق وزیراعظم نواز شریف کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ، 'دنیا کے کسی مہذب معاشرے میں اگر کوئی اس طرح سے پکڑا جائے تو وہ جیل میں ہو، لیکن یہ یہاں 'کیوں نکالا، کیوں نکالا' کر رہے ہیں'۔ عمران خان نے کہا کہ نااہل شخص کو پارٹی صدر بننے کی اجازت دینے کا قانون پارلیمنٹ پر لعنت ہے‘ لفظ لعنت جس تناظر میں کہا اس میں بہت نرمی ہے کوئی اتفاق نہیں کرتا تو رائے شماری کرالیں‘ پارلیمنٹ کا کام قومی مفاد کا تحفظ کرنا ہے۔ ۔ عوام ایسی پارلیمنٹ سے متعلق کیا سوچتے ہیں پتہ چل جائے گا۔ گارنٹی سے کہتا ہوں عوام کی اکثریت اس کی مذمت کرے گی۔ پارلیمنٹ کا کام قومی مفاد کا تحفظ ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ نے نااہل شخص کو پارٹی صدر بننے کی اجازت دی جس نے تین بلین روپے کی منی لانڈرنگ کی۔ نااہل شخص کو پارٹی صدر بنانے کی اجازت دینے کا قانون پارلیمنٹ پر لعنت ہے۔ عمران خان نے کہا ہے کہ جس پارلیمنٹ میں چوروں کا مافیا ہو اس کی عزت کیسے کر سکتا ہوں، لعنت والا لفظ ہلکا ہے، شکر کریں میں نے اس سے بڑا لفظ استعمال نہیں کیا ، خواجہ آصف اور نواز شریف جیسے لوگوں نے اسمبلی تباہ کی، مال روڈ پر جمع ہونے کا مقصد صرف احتجاج ریکارڈ کرانا تھا، وزیرخارجہ خواجہ آصف ملکی قومی سلامتی کیلئے خطرہ ہے،شہباز شریف کو نیب بلانے پر چیئرمین نیب کو مبارکباد پیش کرتا ہوں، شریف خاندان نے منی لانڈرنگ کیلئے پنجاب پولیس کو استعمال کیا تھا، نواز شریف نے 16کمپنیاں بیرون ملک بنائی تھیں جن کے ذریعے منی لانڈرنگ کی جاتی تھی۔پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ پانامہ کے بعد شریف خاندان کی 16کمپنیاں ملک سے باہر سامنے آئیں، ان سے 300ارب روپے ملک سے باہر بھیجے جا رہے تھا،حدیبیہ پیپر بھی پیسہ ملک سے باہر بھیجتی تھی، بلکی منی کو اس طرح وائٹ منی کیا جاتا تھا، 1992میں (ن)لیگ نے قانون بتایا جس کے بعد ان کے اثاثوں میں اضافہ ہوا، مجھے کیوں نکالا کی آج میں دوسری قسط پیش کر رہا ہوں، نواز شریف نے اقامہ لیا تھا جہاں سے پیسہ 16کمپنیوں میں جاتا تھا، ان میں سے ہی کمپنی ہل میٹل میں بھی پیشہ جاتا تھا جو سعودی عرب میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف ملک سے باہر پیسہ بھیجتے تھے، ہل میٹل کے اوپر آج نئے انکشاف ہوئے ہیں،114کروڑ روپیہ اس کمپنی کے ذریعے نواز شریف کو بھیجا گیا، ہل میٹل نے پیسہ مختلف لوگوں کو بھیجا، یہ لوگ پنجاب پولیس کے لوگوں سے منی لانڈرنگ کر ارہے تھے تو پنجاب پولیس کا تو بیڑہ غرق ہونا ہی تھا، نواز شریف کا ڈرائیور 18کروڑ آگے بھیجتا تھا، یہ لوگ کس منہ سے کہتے ہیں کہ مجھے کیوں نکالا، کسی مہذب ملک میں ایسا مجرم جیل میں ہو نہ کہ سڑکوں پر پھر رہا ہو، ہل میٹل کا کاروبار منی لانڈرنگ کا ایک طریقہ ہے، یہ لوگ ملک کے قانون توڑ کے پیسے بنا رہے ہیں، چوہدری شوگر ملز کا کیس ایس ای سی پی کے پاس آیا جس پر کوئی کارروائی نہ کی گئی، نئی دستاویزات میں لوگوں کے نام اور اکاؤنٹ نمبر شامل ہیں جو ہم نیب کو دیں گے،میں نیب کو مبارک دیتا ہوں کہ انہوں نے شہباز شریف کو طلب کیا ہے، پوری قوم چیئرمین نیب کی طرف دیکھ رہی ہے، نواز شریف نے نیب میں اپنے لوگ بھرتی کئے تھے، نیب کی تیاری کی کمی کی وجہ سے حدیبیہ کیس واپس بھیج دیا گیا، پوری قوم چیئرمین نیب کے ساتھ کھڑی ہے، ان لوگوں نے مجھ پر 12کیس کئے اور جو نہ خریدا جائے اس پر کیس کر دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لعنت والا لفظ ہلکا ہے، شکر کریں میں نے اس سے بڑا لفظ نہیں لیا، اس ملک میں بچوں کو کھانا نہیں ملتا اور ان لوگوں کا پیٹ نہیں بھرتا، اسمبلی سے استعفوں کا فیصلہ ابھی نہیں کیا، اس پر بات ہو رہی ہے، اسمبلی سو قراردادیں پاس کرے میرے خلاف۔

عمران خان

مزید :

صفحہ اول -