وزیراعلیٰ پرویز خٹک بداخلاقی کے بعد قتل ہونیوالی عاصمہ کے گھر پہنچ گئے، لواحقین سے اظہار تعزیت

وزیراعلیٰ پرویز خٹک بداخلاقی کے بعد قتل ہونیوالی عاصمہ کے گھر پہنچ گئے، ...

مردان(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے مبینہ بداخلاقی کے بعد قتل ہونے والی کمسن بچی عاصمہ کے گھر جا کر اہلخانہ سے اظہار تعزیت کیا اور ملزمان کی گرفتاری کی یقین دہانی بھی کرائی۔ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک صوبائی وزراء اور آئی جی پولیس کے ہمراہ کمسن عاصمہ کے گھر پہنچے اور انہوں نے متاثرہ بچی کے لواحقین سے ملاقات کی۔ وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ دکھ کی اس گھڑی میں متاثرہ خاندان خود کو تنہا نہ سمجھے، عاصمہ قتل کی تفتیش جاری ہے اور امید ہے کہ قاتل جلد گرفت میںآئیں گے۔وزیراعلیٰ پرویز خٹک کا مزید کہنا تھا کہ صوبائی حکومت عاصمہ کے خاندان کے ساتھ ہے۔ضلعی ناظم نے دعویٰ کیا ہے کہ چار سالہ بچی کو بداخلاقی کا نشانہ بناکر قتل کیا گیا ،دوسری جانب ضلعی حکومت نے کل اے پی سی طلب کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس حوالے سے ضلعی ناظم حمایت مایار کا کہنا ہے کہ مقدمے میں بداخلاقی اور دہشت گردی کی دفعات شامل نہ کی گئیں اور 24 گھنٹے میں قاتل گرفتار نہ ہوا تو آئندہ کا لائحہ عمل دیا جائے گا۔ضلعی ناظم کا کہنا ہے کہ اے پی سی کے لئے تمام جماعتوں کو دعوت نامے جاری کیے جائیں گے اور 19 جنوری کو ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس میں عاصمہ کے ساتھبداخلاقی اور قتل کیس پر غور و کیا جائے گا۔ادھر پولیس کا دعویٰ ہے کہ واقعے کے بعد مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے جن سے تفتتیش جاری ہے جب کہ بچی کا ٹیسٹ ڈی این اے کے لئے پنجاب بھجوایا گیا ہے۔خیال رہے کہ مردان کے گاؤں گوجر گڑھی کے علاقہ جندر پار سے 4 سالہ بچی عاصمہ لاپتہ ہوگئی تھی جس کی لاش چند روز قبل کھیتوں سے ملی جسے مبینہ طور پربداخلاقی کے بعد قتل کیا گیا تھا۔

مزید : صفحہ آخر