پارلیمنٹ پر لعنت بھیجنے والے تنخواہیں واپس کرنے کا بھی اعلان کریں: بلدیاتی نمائندے

پارلیمنٹ پر لعنت بھیجنے والے تنخواہیں واپس کرنے کا بھی اعلان کریں: بلدیاتی ...

  

لاہور(دیبا مرزا سے) حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) کے لاہور بھر کے بلدیاتی نمائندوں اور مسلم لیگی خواتین راہنماؤں نے متحدہ اپوزیشن کے آل پارٹیز فلاپ جلسے پر اپنے اپنے ردعمل کااظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ کیسا اللہ کاان سے انصاف ہے کہ یہ لوگ ہمارے منتخب قائدین سے استعفے لینے کے لئے آئے تھے مگر اب خود ہی مستعفی ہونے کااعلان کر گئے ہیں لیکن اب مزید جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے ان ساڑھے چار سالوں میں انہوں نے قومی اسمبلی سے جو تنخواہیں لی ہیں وہ بھی واپس کرنے کااعلان کریں اور اس سے بھی بڑھ کر شیخ رشید احمد اور عمران خان آج یہ بھی اعلان کردیں کہ انہوں نے جس مقدس ایوان پر لعنت بھیجی ہے اس میں آئندہ وہ کبھی بھی ایم این اے بن کر نہیں جائیں گے ۔ان خیالات کااظہار بلدیاتی نمائندوں اجمل ہاشمی‘ راشد کرامت بٹ‘ ملک شوکت کھوکھر‘ میاں اویس کھوکھر‘ مجید عالم ‘ مرزا رضوان بیگ‘ شیخ محمد نعیم ‘ محمد فیاض ورک ‘ محمود اختر بٹ‘ سجاد ربانی‘ حسنین شاہ‘نبیلہ یاسمین ‘ زاہدہ اظہر‘ عفت اور ثناء فرحان سمیت دیگرنے اپنے اپنے ردعمل میں کیا۔بلدیاتی نمائندوں نے کہا لاہوریوں نے متحدہ اپوزیشن کی جماعتوں کو مسترد کردیا ہے ان کی کال پر لاہورئیے باہر ہی نہیں آئے اور یہ سب جماعتیں ملکر بھی چند سو لوگوں کو مال روڈ پر نہ لاسکیں ۔انہوں نے کہا کہ جتنی خدمت لاہور کے عوام کی مسلم لیگ (ن) نے کی ہے وہ کس طرح سے متحدہ اپوزیشن کے سازشی لیڈروں کے چکروں میں آکر مسلم لیگ کے خلاف سڑکوں پر آ سکتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ آج مسلم لیگ کی حکومت نے لاہور شہر کی تقدیر بدل کررکھ دی ہے آج لاہور شہر کا شمار دنیا کے بہترین شہروں میں ہوتا ہے میٹرو بس سروس اور اورنج لائن میٹرو ٹرین لاہور کے شہریوں کے لئے بہت بڑے تحفے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اگر اپوزیشن والے سازشیں کرنے کی بجائے حکومت کا ساتھ دیں اور حکومت کے شانہ بشانہ چلکر ملکی ترقی میں اپنا مثبت رول ادا کریں تو آج اس سے بھی کہیں اور زیادہ ملکی ترقی ہو سکتی تھی لیکن افسوس کی بات ہے کہ پیپلز پارٹی والے جو خود کو جمہوری لوگ کہتے ہوئے نہیں تھکتے وہ بھی آج علامہ ڈاکٹر طاہر القادری اور عمران خان جیسے لوگوں کے ہاتھوں یر غمال بنے ہوئے ہیں اور وہ بھی ایک منتخب جمہوری حکومت کو کمزور کرنے کی کوششوں میں لگے ہوئے ہیں جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -