پارلیمنٹ پر ملامت اور منتخب حکومت کو گرانا نامناسب ہے، پلڈاٹ

پارلیمنٹ پر ملامت اور منتخب حکومت کو گرانا نامناسب ہے، پلڈاٹ

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)پلڈاٹ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ منتخب حکومت کو تحریک اورسڑکوں پر دھرنوں کے ذریعے گرانے کی کوششیں جمہوری اقدار اور اصولوں کے خلاف ہیں۔ آج کے جاری کردہ بیان میں پلڈاٹ نے کہاہے کہ منتخب حکومتیں عوام کی طرف سے دیے گئے مینڈیٹ کی نمائندگی کرتی ہیں۔ مصروف شاہرات کو بند کرنے اور تعلیمی اداروں اور ہسپتالوں تک رسائی میں رکاوٹ کے ذریعے اِن حکومتوں کو گراناجمہوریت کے اصولوں کے خلاف ہے ۔ جمہوریت لوگوں کو اپنے نمائندے منتخب کرنے اور اُن کے ذریعے حکومت چلانے کا حق دیتی ہے۔ اِس قسم کی تحریک کی وجہ سمجھنا بہت ہی مشکل ہے جب کہ حکومت کی مدت اگلے پانچ مہینوں میں ختم ہو رہی ہو۔یہ نہ صرف غیر جمہوری عمل ہے بلکہ منتخب حکومت کو گراناملک میں انتشاراور آئندہ عام انتخابات کے انعقاد کو بھی خطرے میں ڈال سکتا ہے۔ سیاسی جماعتوں کے اِس طرح کھلے عام حکومت گرانے کے اعلانات نہ صرف ملکی سلامتی کو خطرے سے دو چار کررہے ہیں بلکہ یہ سیاسی جماعتیں اپنی نمائندگی کے اصول کی بھی واضح خلاف ورزی کررہی ہیں۔ پلڈاٹ نے کچھ سیاستدانوں کی طرف سے پارلیمنٹ کو ملامت کرنے کے لیے غیر مناسب الفاظ کے استعمال پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ پلڈاٹ نے کہا کہ اراکین اور پارلیمنٹ کی کارکردگی پر تنقیدی جائزہ اور تبصرہ کیا جا سکتا ہے لیکن وہ ادارے جو عوامی رائے کی نمائندگی کرتے ہوں اُ ن پر ملامت کرنا کسی بھی تہذیب یافتہ معاشرے میں قابلِ قبول نہیں۔ پارلیمنٹ کی ملامت کرنا پاکستان کے شہریوں کی مذمت کرنے کے مترادف ہے اور جمہوری اقدار کے حامی تمام لوگوں کو اِ س سے اجتناب کرنا چاہیے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر