نقیب اللہ محسوددہشتگردی سمیت دیگر مقدمات میں مفرورتھا،تحقیقاتی کمیٹی میں ثبوت پیش کروں گا،راﺅ انوار

نقیب اللہ محسوددہشتگردی سمیت دیگر مقدمات میں مفرورتھا،تحقیقاتی کمیٹی میں ...
نقیب اللہ محسوددہشتگردی سمیت دیگر مقدمات میں مفرورتھا،تحقیقاتی کمیٹی میں ثبوت پیش کروں گا،راﺅ انوار

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)ایس ایس پی ملیر راﺅ انوار نے کہا ہے کہ نقیب محسود 2014 میں مفرور تھا،نقیب پولیس مقابلہ، اقدام قتل،دھماکا خیز مواداوردہشتگردی کیس میں مفرورتھااور اس کیخلاف مقدمہ سچل تھانے میں درج ہوا۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے راﺅ انوار نے کہا کہ 2014 میں نورعالم،زاہد اللہ اوردیگر2 ساتھی مارے گئے تھے ، ان کاسرغنہ عابدمچھڑ،سیف الدین ،ارشاد ، نقیب محسود، مولوی یارمحمد مفرورتھے،ملزموں نے تاوان کیلئے تاجرکوبھی اغوا کیا گیاتھا۔

ایس ایس ملیر نے کہا کہ حلیم عادل شیخ کیخلاف مقدمہ درج ہونے پرپراپیگنڈا کیاجارہاہے،ایک سیاسی جماعت کے لوگ سوشل میڈیا پرمیرے خلاف پراپیگنڈا کررہے ہیں،جو لوگ کام کرتے ہیں ان کیخلاف انکوائریاں ہوتی ہیں۔

راﺅ انوار نے کہاکہ نقیب اللہ محسود اگرلاپتہ تھا تو اہل خانہ نے رجوع کیوں نہیں کیا،نقیب اللہ محسود ملزم تھا،تحقیقاتی کمیٹی کے سامنے ثبوت پیش کروں گا، ان کا کہناتھا کہ نقیب اللہ محسود سو فیصد جرائم پیشہ تھا۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی