اللہ کے وہ بزرگ جنہوں نے ایک ہی وقت میں چالیس گھروں میں دعوت کھائی اور ایک ایک غزل بھی لکھی۔روحانی اجسام کی وہ کیفیت جواللہ والوں کو نصیب ہوجاتی ہے

اللہ کے وہ بزرگ جنہوں نے ایک ہی وقت میں چالیس گھروں میں دعوت کھائی اور ایک ایک ...
اللہ کے وہ بزرگ جنہوں نے ایک ہی وقت میں چالیس گھروں میں دعوت کھائی اور ایک ایک غزل بھی لکھی۔روحانی اجسام کی وہ کیفیت جواللہ والوں کو نصیب ہوجاتی ہے

  

اولیاء کرام جب روحانی منازل طے کرتے ہیں تو اللہ کے حکم و عطا سے ان کا روحانی جسم ایک وقت میں کئی مقامات پر مجسم صورت ظاہر بھی ہوجاتا ہے۔بے شمار کتب میں ایسے واقعات درج ہیں ،اہل تصوف کا ایمان ہے کہ اللہ اپنے خاص بندوں کو یہ نعمت عطا فرماتا ہے ۔حضرت سید علی ہمدانی ؒ کو بھی اللہ کریم نے یہ وصف عطا فرمایا تھا ۔وہ ایران میں پیدا ہوئے ۔ایک درویش، صوفی اور مبلغ اسلام ہونے کیساتھ مصنف بھی تھے۔ عربی اور فارسی میں تقریباَ 1000 کتابچے لکھے۔ کشمیر میں آپ کے قدم مبارک سے اسلام پھیلا اور آپ کی ایک خانقاہ ابھی تک کشمیر میں مرجع خلائق ہے۔

آپ کی کئی کتب برصغیر پاک و ہند پر مغلیہ دورحکومت میں شامل درس رہی ہیں۔ بہت سی کتب کے قلمی نسخے، برٹش میوزیم لندن، انڈیا آفس لائبریری، ویانا، برلن، پیرس، تہران، تاشقند، تاجکستان، پنجاب یونیورسٹی لائبریری، بہاولپور، ایشیاٹک سوسائٹی بنگال، میسور اور بانکی پورہ انڈیا میں موجود ہیں۔ آپ کے مرشد نے آپ کو اولیا اللہ سے فیض حاصل کرنے کے لئے دنیا بھر کی سیر کا حکم دیا تھا ،آپ کشمیر بھی گئے اور ثمر قند بخارا میں بھی بزرگان دین سے روحانی فیض پایا۔

یہ امیر تیمور کا زمانہ تھا ۔وہ آپ کو ختم کر نا چاہتا تھا لیکن آپ کے لاکھوں مریدوں کی وجہ سے خو ف زدہ تھا کہ مریدوں کی وجہ سے ملک نقص امن کا شکار نہ ہو جائے۔لیکن وہ اپنی اس سازش میں کامیاب نہ ہوسکاتھا ۔یہ وہی شیخ ہمدانی ہیں جنہیں ایک بار چالیس مریدین نے اپنے گھر میں دعوت دی اور آپ نے ایک ہی وقت میں سب کے ہاں دعوت کھائی اور وہاں پر ایک غزل بھی لکھی جس کا مجموعہ چہل اسرارکے نام سے موسوم ہے ۔

اس طرح آپ نے 40گھروں میں دعوت اور غزل لکھی جب دعوت ہوگئی اور نماز عصر کا وقت آگیا تو ایک صاحب نے دوسرے سے کہا کہ آج شیخ نے میرے گھر دعوت کھائی ہے تو دوسرا بولا تم جھوٹ بولتے ہو۔ اسی دوران دو اور آگئے ۔وہ کہنے لگے تم دونوں جھوٹ بول رہے ہو ۔شیخ نے تو ہماری دعوت قبول کی ہے ۔اسی طرح کے کل چالیس لوگ آگئے کہ آج شیخ نے بعد ظہر ہماری دعوت قبول کی ہے ۔اب اجماع یہ ہوا کہ شیخ صاحب ہی اب فیصلہ کریں گے۔ اب سب شیخ صاحب کے پاس گئے اور درخواست کی کہ حضرت اب آپ ہی فیصلہ کریں۔

آپ مسکرائے اور کہا ’’تم سب درست اور سچے ہو تم میں سے کوئی بھی جھوٹا نہیں ہے‘‘ اب ثابت یہ ہوا کہ شیخ صاحب سب کے گھروں میں تشریف لے گئے اور چالیس جگہوں پر کھانا کھایا یعنی آپ کے روحانی جسم کا کمال تھا کہ چالیس جگہوں پر کھانا بھی کھایا اور غزل بھی لکھی۔

مزید : روشن کرنیں