کچی مچھلی کھانے کا شوقین آدمی ٹوائلٹ گیا تو جسم کے اندر سے کیا جیتی جاگتی چیز باہر نکل آئی؟ جان کر ہر انسان کے واقعی رونگٹے کھڑے ہوجائیں

کچی مچھلی کھانے کا شوقین آدمی ٹوائلٹ گیا تو جسم کے اندر سے کیا جیتی جاگتی چیز ...
کچی مچھلی کھانے کا شوقین آدمی ٹوائلٹ گیا تو جسم کے اندر سے کیا جیتی جاگتی چیز باہر نکل آئی؟ جان کر ہر انسان کے واقعی رونگٹے کھڑے ہوجائیں

  

نیویارک(نیوز ڈیسک)مچھلی بہت اچھی چیز ہے، خوب کھائیں اور جی بھر کر کھائیں، مگر کبھی بھول کر بھی کچی نا کھائیں ورنہ انجام اس بدقسمت شخص جیسا بھی ہو سکتا ہے۔ یہ صاحب کچی مچھلی کے بہت شوقین تھے، جیسا کہ آپ جانتے ہوں گے کہ سوشی جیسی کچی مچھلی کی ڈش کئی ممالک میںپسند کی جاتی ہے، لیکن اس شوق کے نتائج سے یقینا واقف نہیں تھے۔ اس کی بدقسمتی تھی کہ مچھلی کی بعض اقسام میں پایا جانے والا کیڑا ٹیپ ورم اس کے حصے میں بھی آ گیا۔ نجانے یہ کیڑا کب اس کے جسم میںمنتقل ہوا لیکن جب یہ باہر آیا تو بڑھ کر اتنا لمبا ہو چکا تھا کہ دیکھ کر ڈاکٹروں کے لئے بھی یقین کرنا مشکل ہو گیا۔

اس عجیب و غریب واقعے کا انکشاف ڈاکٹر کینی بان سامنے لے کر آئے، جنہوں نے بتایا کہ رفع حاجت کے دوران اس مریض کے جسم سے بہت بڑا ٹیپ ورم باہر آ گیا اور جب وہ ہسپتال آیا تو خون آلود پاخانے کی شکایت بھی کر رہا تھا۔ ڈاکٹر بان نے مزید بتایا ”مجھے مریض کی بتائی گئی بات پر یقین نہیں آرہا تھا لیکن پھر اس نے ثبوت میرے سامنے رکھ دیا۔ یہ ٹوائلٹ پیپر رول پر لپٹا ہوا ایک لمبا سا کیڑا تھا، جو یقینا ٹیپ ورم تھا۔ شاید آپ یقین نا کر پائیں مگر اس کی لمبائی تقریباً ساڑھے پانچ فٹ تھی۔ مریض نے مجھے بتایا کہ جب وہ ٹوائلٹ پر بیٹھا تھا تو اسے یوں لگا کہ اس کی انتڑیاں باہر آرہی تھیں۔ وہ یہ صورتحال دیکھ کر بے حد خوفزدہ ہوگیا اور پھر اس نے ہاتھ سے پکڑ کر اس کیڑے کو باہر کھینچنا شروع کردیا۔ میرا خیال ہے کہ اس مریض کے پیٹ میں مزید اس طرح کے کیڑے ہوسکتے ہیں جس کے لئے علاج جاری ہے۔“

متاثرہ مریض کے بارے میں معلوم ہوا کہ وہ کچی سالمن مچھلی باقاعدگی سے کھاتا رہا ہے۔ گزشتہ سال امریکی محکمہ صحت نے خبردار کیا تھا کہ الاسکا کے ساحلی علاقوں سے پکڑی جانے والی سالمن مچھلی میں ٹیپ ورم کیڑے ہوسکتے ہیں۔ مغربی ممالک میں کچی مچھلی کھانے کا شوق جاپان سے پہنچا ہے، جہاں کچی مچھلی کی ڈش سوشی اور ساشیمی بہت مقبول ہیں۔ ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ کچے گوشت کا استعمال نہ صرف نظام انہضام کے مسائل پیدا کرسکتا ہے بلکہ دل اور جگر کے لئے بھی خطرنک ہوسکتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس