نئی دہلی ، عام آدمی پارٹی کے20ممبران اسمبلی نا اہل ، سمری صدر کو بھجوا دی گئی

نئی دہلی ، عام آدمی پارٹی کے20ممبران اسمبلی نا اہل ، سمری صدر کو بھجوا دی گئی
نئی دہلی ، عام آدمی پارٹی کے20ممبران اسمبلی نا اہل ، سمری صدر کو بھجوا دی گئی

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن)بھارتی الیکشن کمیشن نے عام آدمی پارٹی کے 20ارکان اسمبلی کی نا اہلی کی سفارش کرتے ہوئے اس کی فائل صدر رام ناتھ کووند کے پاس بھیج دی ہے، صدر کے دستخطوں کے بعد نئی دہلی کے 20 حلقوں میں ضمنی انتخابات کرانے ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق کانگریس کے رہنما اجے ماکن نے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر کی، جس میں مئوقف اختیار کیا کہ عام آدمی پارٹی نے اقتدار میں آنے کے بعد 20 ارکان اسمبلی کو پارلیمانی سیکرٹری مقرر کیا ہے اور  قانون کے مطابق پارلیمنٹ اور اسمبلیوں کے ارکان کہیں اور سے تنخواہ نہیں لے سکتے۔انہوں نے الیکشن کمیشنسے  ان 20ممبران اسمبلی کی نا اہلی کا مطالبہ کیا تھا ۔ اجے ماکن کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے ان ممبران اسمبلی کی نا اہلی کی سفارش کرتے ہوئے سفارش الیکشن کمیشن کو بھجوا دی ہے ۔ 70 رکنی اسمبلی میں عام آدمی پارٹی کے ارکان کی تعداد 65 ہے۔ اگر20 ارکان نااہل قرار دے دیے جاتے ہیں تب بھی حکومت کے لیے کوئی خطرہ نہیں ہوگا۔ اسے اپنی حکومت بچانے کے لیے 35 ارکان کی ضرورت ہے جبکہ 20 ارکان کے نااہل ہونے کے بعد بھی اسمبلی میں اس کے ممبروں کی تعداد 45 رہے گی۔

دوسری جانب عام آدمی پارٹی نے الیکشن کمشن کے فیصلے کو دہلی ہائی کورٹ میں چیلنج کیا ہے۔ پارٹی ترجمان راگھو چڈھا کے مطابق الیکشن کمیشن نے ان کے دلائل نہیں سنے اور نہ ہی ہمیں اپنا موقف پیش کرنے کا موقع نہیں دیا ، الیکشن کمیشن کا یہ رویہ فطری انصاف کے اصولوں کے شدید منافی ہے۔اس معاملے پر عام آدمی پارٹی کے سربراہ کجری وال نے پارٹی رہنماﺅں کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا ہے۔

واضح رہے کہ 2015ءمیں اسمبلی انتخابات میں عام آدمی پارٹی کو 70رکنی اسمبلی میں 67 نشستوں پر کامیابی ملی تھی,  اسی طرح  بی جے پی کے حصے میں تین نشستیں آئیں تھیں جبکہ کانگریس کا کوئی امیدوار کامیاب نہیں ہوا تھا۔ ان انتخابات کے اعلان کے بعد سے ہی مرکزی حکومت اور دہلی حکومت میں ٹکراو جاری ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -