پشاورمیں سردی کی شدت میں اضافہ کیساتھ ہی گیس غائب

پشاورمیں سردی کی شدت میں اضافہ کیساتھ ہی گیس غائب

  



پشاور (سٹی رپورٹر)صوبائی دارالحکومت پشاورمیں سردی کی شدت میں اضافہ کے ساتھ ہی کئی علاقوں سے گیس غائب ہو گئی جس کی وجہ سے گھروں میں کچن کے چولہے ٹھنڈے پڑ گئے صبح اور شام کے اوقات میں کئی گھنٹوں تک گیس غائب رہتی ہے جبکہ رہی سہی کثر باثر افراد کی جانب سے لگائے گئے گیس کمپریسرز نے فوری کر دی جس کے باعث بعض علاقوں میں گیس مکمل غائب رہتی ہے شہر کے مختلف علاقوں جہانگیر پورہ،دلہ زاک،رنگ روڈ،رشید گڑھی سمیت دیگر علاقوں میں گیس لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے جس کی وجہ سے علاقہ مکینوں کوشدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑھ رہا ہے شہریوں نے بتایا ہے کہ بجلی لوڈشیڈنگ کے بعد حکومت نے عوام پر گیس لوڈشیڈنگ کی صورت میں ایک اور عذاب مسلط کی ہے جس کی وجہ سے شہری ذہنی مریض بن گئے ہیں انہوں نے بتایا کہ شہر بیشتر علاقوں میں گیس کی کمی کا مسئلہ سنگین صورتحال ختیار کرگیاجس کی وجہ سے گھروں میں کچن کے چھولے ٹھنڈے پڑ گئے جبکہ بااثر افراد کی جانب سے گیس اپنی طرف کھینچنے والی مشین یعنی گیس کمپریسرز نے رہی سہی کثر بھی پوری کر دی ہے اور چند گھروں کے علاوہ گیس تقریباًغائب ہوگیا ہے جس کی وجہ شہریوں میں لڑائی جھگڑے معمول بن گیا، شہریوں نے بتایا ہے کہ گیس کی کمی کی وجہ سے صبح سکول جانے والے بچوں سمیت نوکر پیشہ افراد ناشتہ کئے بغیر دفاتر جانے پر مجبورہیں انہوں نے کہا کہ مختلف علاقوں میں بااثر لوگوں نے گیس کی کمی کو پورا کرنے کیلئے کمپریسر لگائے ہیں جو کہ مارکیٹ میں کھلے عام ایک ہزار روپے سے 1500روپے تک دستیاب ہے،انہوں نے مزیدبتایاکہ پہلے گیس کی کمی ضرور تھی لیکن ہمسائیوں کی جانب سے گیس کمپریسر لگانے کی وجہ سے ا ب ان کے گھر گیس کی ترسیل مکمل بند ہوگئی ہے کئی بار شکایت بھی کی لیکن شنوائی نہیں ہوئی۔انہوں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ غیر قانونی کمپر یسر لگانے والوں کیخلاف سخت کارروائی کی جائے اور گیس کی کمی کو پورا کرنے کیلئے موثر اقدامات کئے جائیں۔ کہ گیس لوڈشیدنگ کی وجہ سے سکول جانے والے بچوں سمیت سرکاری دفاتر جانے والے ملازمین ناشتہ کئے بغیر گھروں سے نکلتے ہیں انہوں نے مزید بتایا کہ صبح اور شام کو گیس مکمل غائب ہو جاتی ہے جبکہ بعض ٹائم آکر بھی متوسط طبقہ ایسے استعمال نہیں کر سکتے کیونکہ بآثر افعاد کی جانب سے گیس لائن پر لگائے گئے کمپریسرز کی وجہ سے وہ گیس استعمال کرنے سے محروم رہ جاتے ہیں انہوں نے صوبائی حکومت اور دیگر ذمہ داران سے گیس لوڈشیڈنگ ختم کرنے اور کمپریسرز لگانے والوں کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ہے

مزید : پشاورصفحہ آخر